کم جونگ اُن چین میں ہی تھے، چینی وزارت خارجہ کا اعتراف

ویب ڈیسک – بالآخر چین نے اعتراف کر ہی لیا ک شمالی کوریا کے سربراہ کم جونگ اُن نے رواں ہفتے چین کا دورہ کیا۔ چین اور شمالی کوریا کے سرکاری ذرائع ابلاغ نے کم جونگ اُن کے دورہ چین کیتصدیق کر دی۔

خبر  کے مطابق کم جونگ اُن کے ہمراہ ان کی اہلیہ ری سول جو کے علاوہ دیگر اعلیٰ حکام بھی گزشتہ اتوار کو بیجنگ آئے تھے جہاں وہ بدھ تک مقیم رہے۔ اپنے والد کم جونگ اِل کی جگہ 2011میں اقتدار سنبھالنے والے کم جونگ اُن کا یہ پہلا غیر ملکی دورہ تھا۔

چینی حکومت کا کہنا ہے کہ  کم جونگ اُن کا یہ دورہ غیر سرکاری تھا لیکن  اس غیر سرکاری دورے کے دوران بھی شمالی کوریا کے حکمران کو سرکاری دوروں پر آنے والے سربراہانِ مملکت کی طرح پورا  اعزاز، گارڈ آف آنر اور بیجنگ کے گریٹ ہال  میں استقبالیہ دیا گیا۔

اس دورے کے دوران کم جونگ ان نے چین کے صدر ژی جن پنگ سے بھی ملاقات کی جس کی ویڈیو چین کی سرکاری خبر رساں ایجنسی ژین ہوا  نے جاری کی ہے۔

بتایا گیا کہ چینی صدر سے ملاقات میں کم جونگ اُن نے کہا کہ وہ اپنے والد اور دادا کی خواہشات کے عین مطابق جزیرہ نما کوریا کو جوہری  اسلحے  سے پاک کرنے کے عزم پر قائم ہیں۔

source

تبصرہ کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *