پر امن جلوس پر اسرائیلی فوج کی فائرنگ، 15 فلسطینی شہید1400 سے زائد زخمی

ویب ڈیسک – صیہونی فوج کی نہتے فلسطینیوں پر سیدھی فائرنگ اور شیلنگ سے اب تک کم از کم 15 فلسطینی شہید جبکہ 1400 سے زائد شدید زخمی ہو گئے ہیں۔ یہ افسوسناک واقع اس وقت رونما ہوا جب ہزاروں فلسطینی اپنی زمینوں پر اسرائیلی قبضے کے 42 سال پورے ہونے ہر “لینڈ ڈے” منانے کے لیے احتجاجاً اسرائیل فلسطین سرحد پر موجود تھے۔

ہزاروں فلسطینی مرد، عورتیں اور بچے 1976 میں فلسطینی زمین پر یہودیوں کے قبضے کے خلاف اکٹھے ہوئے اور اپنی زمین کی واپسی کے لیے احتجاج کر رہے تھے کہ اسرائیلی فوجیوں نے مظاہرین پر سیدھی فائرنگ کر دی جس سے 15 افراد موقع پر ہی شہید ہو گئے، جبکہ زہریلی گیس کی شیلنگ سے 500 سے زائد افراد شدید متاثر ہوئے ہیں۔

یاد رہے کہ اسرائیل  کی جانب سے30 مارچ 1976 کو فلسطینی عوام کے ہزاروں  ایکٹر علاقے کو اپنے قبضے میں  لے  لیا تھا تب سے  اس واقع کو “لینڈ ڈے” کے نام سے  منایا جاتا ہے، فلسطینی گروہوں کی جانب سے کئی دن قبل” واپسی کا عظیم جلوس” کی اپیل  پر ہزاروں کی تعداد میں فلسطینی عوام  نے شرکت کے لیے صبح سے ہی سرحدی علاقوں  یکجا ہونا شروع کر دیا تھا۔

فلسطینی پرچم  اٹھانے والے  ہزاروں کی تعداد میں افراد نے  اپنی سر زمین کی واپسی کے مطالبے کے ساتھ ملک کے متعدد علاقوں میں جلوس نکالے۔

تبصرہ کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *