آصف زرداری کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری

کراچی – سابق صدر پاکستان اور پاکستان پیپلزپارٹی کے شریک چئیرمین آصف علی زرداری کو 35 ارب روپے کی منی لانڈرنگ کیس میں گرفتار کرنے کا حکم جاری کر دیا گیا۔ بینکنگ کورٹ نے آصف علی زرداری کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کردیئے۔

کراچی کی بینکنگ عدالت نے آصف علی زرداری سمیت تمام مفرور ملزمان کو گرفتار کر کے پیش کرنے کا حکم جاری کر دیا۔ دیگر مفرور ملزمان میں اسلم مسعود، عارف خان، نورین سلطان اور دیگر ملزمان شامل ہیں۔

آج جمعہ کے روز کراچی کی بینکنگ کورٹ میں جعلی بینک اکاؤنٹس سے سماعت کے آغاز پر ایف آئی اے نے اومنی گروپ کے  انور مجید اور ان کے بیٹے اے جی مجید کو عدالت کے سامنے پیش کیا۔

اس موقع پر ایف آئی اے پراسیکیوٹر نے عدالت سے جسمانی ریمانڈ کی استدعا کرتے ہوئے مؤقف اپنایا کہ ملزمان پر جعلی بینک اکاؤنٹس کے ذریعے اربوں روپے کی منی لانڈرنگ کا الزام ہے لہٰذا ملزمان سے تحقیقات کے لیے ان کا 14 روزہ جسمانی ریمانڈ دیا جائے۔ عدالت نے ایف آئی اے کی درخواست منظور کرتے ہوئے ملزمان کا جسمانی ریمانڈ دے دیا۔

یاد رہے کہ جعلی بینک اکاؤنٹس سے منی لانڈرنگ کے کیس میں پیپلز پارٹی کے شریک چئیرمین آصف زرداری اور ان کی ہمشیرہ فریال تالپور بھی نامزد ہیں جب کہ نجی بینک کے سربراہ حسین لوائی اور طحہٰ رضا جوڈیشل ریمانڈ پر جیل میں ہیں۔ ایف آئی اے نے کیس میں سابق صدر آصف زرداری سمیت 20 ملزمان کو مفرور قرار دیا ہے۔