بے عزتی کروانے نہیں آیا، غرور گھر چھوڑکر آیا کریں: خواجہ سعد اور چیف جسٹس میں تلخ کلامی
یہ خبر لائیک کریں

لاہور – سپریم کورٹ کی لاہور رجسٹری میں ریلوے خسارہ کیس ازخود نوٹس میں آج سابق وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق کی پیشی ہوئی تو خواجہ سعد رفیق شدید غصے میں نظر آئے اور کئی بار چیف جسٹس ثاقب نثار سے الجھے۔

دوران سماعت چیف جسٹس نے لیگی رہنما خواجہ سعد سے استفسارکیا کہ کیا آپ نے آڈٹ رپورٹ دیکھی ہے؟ جس پر خواجہ سعد رفیق نے کہا میں کوئی آڈٹ افیسر نہیں جو ایک ہزار صفحوں کی رپورٹ پڑھوں۔ خواجہ سعد نے مزید کہا کہ میں شاباش لینے آتا ہو ں یہاں ڈانٹ پڑ جاتی ہے۔

میں یہاں بے عزتی کروانے نہیں آیا۔ چیف جسٹس یہاں کوئی آپ کی بے عزتی نہیں کر رہا۔ جس پر خواجہ سعد نے کہا کہ سپریم کورٹ کا کنڈکٹ ہے کہ وہ کسی کی بے عزتی نہیں کر سکتی۔ چیف جسٹس نے کہا کہ آپ آج گھر سے ہی غصے میں آئے ہیں۔ اپنا غرور گھر چھوڑ کر آیا کریں۔

خواجہ سعد نے کہا کہ میرا الیکشن ہے مجھے آڈٹ رپورٹ پر جواب جمع کروانے کے لئے ایک ماہ کی مہلت دیں۔ عدالت نے خواجہ سعد کی تلخ کلامی کے باوجود انہیں اپنا جواب جمع کروانے کے لئے ایک ماہ کی مہلت دے دی۔

یہ خبر لائیک کریں

تبصرہ کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *