نوازشریف کا مقدر گھر ہو گا یا اڈیالہ جیل؟ فیصلہ محفوظ اگلے ہفتے سنایا جائے گا

ویب ڈیسک – پاکستان کے سابق وزیراعظم نوازشریف کا مقدر گھر ہو گا یا اڈیالہ جیل؟ احتساب عدالت نے العزیزیہ اور فلیگ شپ ریفرنس کیس کا فیصلہ محفوظ کر لیا۔ نوازشریف کی قسمت کا فیصلہ اگلے ہفتے 24 دسمبر کو سنایا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت نے سابق وزیراعظم نواز شریف کے بیٹے حسن نواز کی پراپرٹی سے متعلق مزید کاغذات جمع کرانے کے لئے ایک ہفتے کی استدعا مستر کرتے ہوئے کیس کا فیصلہ محفوظ کر لیا۔

آج کی احتساب عدالت میں کیس کی سماعت کے دوران فلیگ شپ ریفرنس میں نیب پراسیکیوٹر نے حتمی دلائل دیتے ہوئے کہا کہ ملزمان کو صفائی دینے کے تین تین موقع دیئے گئے مگر انہوں نے جائیداد کے ذرائع نہیں بتائے۔  نواز شریف کو بچوں کی کمپنیوں سے بھاری رقوم ٹرانسفر ہوتی رہیں، نوازشریف کے صاحبزادے حسن نواز اور حسین نواز شریک ملزمان ہیں۔

نوازشریف کے وکیل خواجہ حارث نے کہا نواز شریف نے کیپٹل ایف زیڈ ای سے تنخواہ وصولی کبھی تسلیم نہیں کی، کیپٹل ایف زیڈ ای میں نواز شریف کا عہدہ اعزازی تھا۔جبکہ نوازشریف نے موقف اختیار کیا کہ کاروبار میرے بچوں کے ہیں جو بالغ اور خود مختار ہیں، میرا ان کاروبار سے کوئی تعلق نہیں۔

نوازشریف نے آج عدالت میں کہا کہ نواز شریف نے کہا ریفرنسز میں میری 78 ویں پیشی ہے، ایک پائی کی کرپشن ثابت نہیں ہوئی۔ احتساب عدالت کے جج نے تمام دلائل سننے کے بعد کہا کہ دونوں ریفرنس کا فیصلہ 24 دسمبر کو سنایا جائے گا۔

تبصرہ کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *