آصف علی زرداری کے گرد شکنجہ کسنے لگا، ملک چھوڑنے پر پابندی، نام ایگزیٹ کنٹرول لسٹ میں ڈالنے کا حکومتی فیصلہ

ویب ڈیسک – پیپلزپارٹی کے شریک چئیرمین اور سابق صدر پاکستان آصف علی زرداری کے خطرات منڈلانے لگے۔ حکومت نے سابق صدر کے گرد شکنجہ کسنے کا فیصلہ کرتے ہوئے ان کے ملک چھوڑنے پر پابندی لگانے کا فیصلہ کر لیا۔

تفصیلات کے مطابق آج اسلام آباد میں وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا۔ اجلاس میں سابق صدر آصف علی زرداری سمیت 172 لوگوں کے نام ایگزیٹ کنٹرول لسٹ میں شامل کرنے کا فیصلہ کر لیا گیا جس کا اعلان وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چودھری نے ایک پریس کانفرنس میں کیا۔

آصف علی زرداری پر جعلی اکاوٴنٹس کے ذریعے رقوم کی منتقلی کے مقدمات چل رہے ہیں۔ فواد چودھری نے اپنی پریس کانفرنس میں کہا کہ جعلی اکاونٹس کیس کے حوالے سے جےآئی ٹی کی رپورٹ میں انکشاف کیا گیا کہ منی لانڈرنگ کیلئےحکومتی ذرائع استعمال کیےگئے۔

انہوں نے کہا کہ یہ پرانا پاکستان نہیں جہاں دونوں بڑے سودے بازی کرلیں اور ہنسی خوشی زندگی گزاریں، ملک میں احتساب کا عمل بلاخوف و خطر جاری رہے گا۔

کراچی میں ایم کیو ایم کے سابق ممبر قومی اسمبلی علی رضا عابدی کے قتل کے حوالے سے فواد چودھری نے کہا کہ ملک سے باہر بیٹھے کچھ لوگ کراچی کا امن و امان خراب کرنے میں ملوث ہیں۔ انہوں نے کہا کہ  کراچی میں امن خراب کرنے کا معاملہ برطانیہ اور جنوبی افریقہ کی حکومتوں  سے اٹھایا جائے گا۔