مشکل ملکی حالات اور پارٹی اختلافات، وزیراعظم عمران خان کے استعفےٰ کے حوالے سے بڑا دعویٰ

ویب ڈیسک – تحریک انصاف کو حکومت سنبھالے اگرچہ 8 ماہ سے زائد کا عرصہ گزر چکا ہے تاہم ملکی معیشیت سنبھلنے کا نام نہیں لے رہی۔ وزیراعظم عمران خان کی جانب سے جہاں دوست ممالک سے مدد لینے سلسلہ جاری ہے تو وہیں انہیں ملک میں شدید تنقید کا سامنا کر نا پڑ رہا ہے۔ ملک میں بڑھتی مہنگائی اور اپوزیشن کی جانب سے ٹف ٹائم دیئے جانے کے ساتھ ساتھ عمران خان کو اب پارٹی اختلافات کا سامنا بھی کرنا پڑ رہا ہے۔

ایسے حالات میں پیپلز پارٹی کے رہنما منظور وسان کا کہنا ہے کہ جون کے بعد حالات ایسے ہوں گے کہ وزیراعظم عمران خان خود ہی استعفی دیں گے۔ایکسپریس نیوز کے مطابق سوشل میڈیا پر جاری وڈیو میں منظور وسان نے کہا ہے کہ جس طرح حکومت ٹوئٹر سے چلائی جارہی ہے اس طرح حکومتیں نہیں چلائی جاتیں، عمران خان سے عوام کا اعتماد ختم ہوچکا ہے، عمران خان کو ان کی اپنی پارٹی کی طرف سے الجھن کا شکار کروایا جارہا ہے، پارٹی رہنماو¿ں کی طرف سے ایسے حالات پیدا کئے جائیں گے جس سے عمران خان کی اہمیت ختم ہوجائے گی۔

انہوں نے مزید کہا کہ  عمران خان کو لانے والوں کے لیے آگے چل کر پریشانی بڑھ جائے گی، وہ بہت جلد محسوس کریں گہ عمران خان کو لانا ان کی غلطی تھی، عمران خان سے سیاستدانوں کو بدنام کروانے کے بعد ان کی چھٹی کروائی جائے گی۔

منظور وسان جو کہ اس سے قبل بھی سیاسی پشین گوئیوں اور اپنے خوابوں کے حوالے سے کافی مشہور ہیں نے کہا کہ آنے والا 2020 کا سال کپتان کے لئے کافی کڑوا ثابت ہونے والا ہے۔ منظور وسان نے جہاں عمران خان کی سیاسی زندگی کی طرف اشارہ کیا وہیں انہوں نے ان کی خطروں میں گھری ازدواجی  زندگی پر بھی سوال اٹھا دیئے۔