میں پاکستان اسلامی تعلیمات کا مطالعہ کرنے آئی، جھوٹے مقدمے میں پھنسایا گیا: منشیات سمگلنگ میں قید چیک حسینہ ٹریزا

ویب ڈیسک – پاکستان میں منشیات سمگلنگ میں قید چیک رپبلک کی ماڈل ٹریزا کو پاکستانی عدالتوں کی جانب سے 8سال قید کی سزا سنائی گئی تھی تاہم اب مجرمہ حسینہ نے لاہور ہائی کورٹ میں اپنی سزا کے خلاف اپیل دائر کردی ہے۔

پاکستان کے نامور انگریزی اخبارایکسپریس ٹربیون نے اپنی ایک رپورٹ میں کہا کہ ماڈل ٹریزا کے وکیل کی جانب  سے لاہور ہائیکورٹ میں ایک اپیل دائر کی گئی جس میں استدعا کی گئی ہے کہ مجرمہ کو غلط الزامات کے تحت سزا سنائی گئی، لہذا چیک ماڈل ٹریزا کی سزا کالعدم قراردی جائے ۔

اپنی درخواست میں چیک ریپبلکن ماڈل ٹریزا نے دعویٰ کیا ہے کہ وہ اسلامی تعلیمات کیلئے پاکستان آئی تھی لیکن اسے یہاں منشیات سمگلنگ کے الزام میں قید کر لیا گیا۔

یاد رہے کہ 20مارچ کو لاہور کی ماتحت عدالت نے چیک رپبلک کی ماڈل ٹریزا کو منشیات سمگلنگ کے الزام میں آٹھ سال اور چار ماہ قید کی سزا سنائی اور 14لاکھ روپے سے زائد جرمانہ بھی کیا۔

ماڈل کو جنوری 2018ءمیں 9کلوگرام ہیروئن سمگلنگ کی کوشش کے دوران علامہ اقبال انٹرنیشنل ایئرپورٹ سے حراست میں لیاگیاتھا، ماڈل 15 کروڑ مالیت کی منشیات لاہور سے متحدہ عرب امارات لے کر جارہی تھی۔