بازو پر بنے حیرت انگیز ٹیٹو

اوپر والی تصویر دیکھی جائے تو یوں لگتا ہے کہ کسی خاتون نے بازو پر سوئی سے رنگ برنگی دھاگوں سے کڑھائی کی ہوئی ہے۔ لیکن اس کی ڈیزائننگ میں کوئی دھاگہ استعمال نہیں ہوا ہے بلکہ یہ ماہرین کی تیار کردہ مخصوص سیاہی کی بدولت ایسے دکھائی دیتے ہیں۔سلائی کڑھائی ایک روایتی ہنر ہے جو اب بزرگوں تک محدود ہوکررہ گیا ہے لیکن اب طرز کے ٹیٹو یا جسمانی نقش و نگار اب نوجوانوں میں تیزی سے مقبول ہورہے ہیں۔

 

اس طرح کے ایمبرائڈری والے ٹیٹو اتنے خوبصورت اور دیدہ زیب ہیں کہ ان پر گویا حقیقت کا گمان ہوتا ہے۔کڑھائی والے ٹیٹو دیکھ کر پہلے پہل یہ گمان ہوتا ہے کہ گویا کس نے جلد پر سوئی دھاگے کی کڑھائی کراادی ہے۔ پھر تھری ڈی ساخت کی بنا پر یہ حیرت انگیز کڑھائی کی مدد سے یہ خاص ابھار کی طرح دکھائی دیتےہیں۔ ذیل میں حیرت انگیز روشنائی سے بنے ہوئے ٹیٹو ملاحظہ کیجئے۔