بابری مسجد کی جگہ رام مندر کی تعمیر، مودی نے الیکشن کا منشور پیش کر دیا

ویب ڈیسک – مذہب اور مسلمان دشمنی کی بنیاد پر الیکشن میں کامیابی کا منصوبہ بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کی جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے اپنا الیکشن منشور پیش کر دیا۔ منشوری میں شامل 75 نکات کو 2022 تک مکمل کیا جائے گا۔ بی جے پی نے منشور اپنی ویب سائٹ پر بھی ڈال دیا۔،

تفصیلات کے مطابق بھارتی ہندو انتہا پسند جماعت بی جے پی نے الیکشن میں کامیابی حاصل کرنے کے لئے ایک بار پھر مذہبی جنونیت کا سہارا لے لیا۔ بی جے پی نے تاریخی بابری مسجد کی جگہ رام مندر کی تعمیر کو اپنے منشور کا حصہ بنا لیا۔ اس کے علاوہ  مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت سے متعلق بھارتیآئین کے آرٹیکل 370 اور 35A کو ختم کرنے کو بھی انتخابی منشور میں شامل کر لیا گیا ہے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق بی جے پی کے مشور میں 75 نکات شامل ہیں جنہیں 2022 تک مکمل کر لیا جائے گا۔ اس سے قبل  بھارتی وزیراعظم نریندرا مودی نے پاکستان پر سرجیکل اسٹرائیک کرنے اور پاکستان کا ایف سولہ طیارہ تباہ کرنے کا دعویٰ کیا تھا جو عالمی رپورٹس میں بھی جھوٹا قرار دے دیا گیا جس سےبھارت کو پوری دنیا کے سامنے سخت خفت اٹھانا پڑی تھی۔

یاد رہے کہ 1992 میں بھارتی انتہا پسند ہندووٴں نے ایودھیا کے مقام پر تاریخی بابری مسجد کر دیا تھا۔ بابری مسجد مغل بادشاہ نے بابر نے تعمیر کروایا تھا۔ ہندو انتہاپسندوں کے مطابق بابری مسجد ہندو دیوتا رام کی جنم بھمی کو گرا کر تعمیر کی گئی تھی اور اب ہندوں اس مسجد کی جگہ دوبارہ رام مندر تعمیر کرنا چاہتے ہیں۔