بھارتی ہندووٴں کا مسلمان بزرگ شہری پر تشدد، زبردستی سوٴر کا گوشت کھلا دیا

ویب ڈیسک – بھارت میں انتہا پسند ہندووٴں کی مسلمانوں کے خلاف دشمنی کا ایک اور واقعہ سامنا آگیا ۔ باریش بزرگ مسلمان شہری کو تشدد کا نشانہ بنایا اور ناپاک جانور سوٴر کا گوشت زبردستی کھلا دیا۔ سوشل میڈیا پر ویڈیو وائرل ہو گئی۔

تفصیلات کے مطابق بھارت کی ریاست آسام میںجنونی ہندوؤں نے ایک مسلمان شہری شوکت علی پر گائے کا گوشت فروخت کرنے کا الزام لگا کر بری طرح تشدد کا نشانہ بنا یا اور پھر انہیں سور کا گوشت کھانے پر مجبور کیا گیا۔

سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ ہجوم نے68  سالہ مسلمان بزرگ شوکت علی کو گھیر رکھا ہے، بزرگ شہری کو شدید تشدد کا نشانہ بنایا گیا ہے، ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ شہری کے کپڑے پھٹے ہوئے ہیں اور وہ کیچڑ میں لت پت ہیں۔

 

جبکہ  دوسری ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ تنہا مسلمان چہری کو گھیر کر انتہا پسند ہندوؤں نے ایک پیکٹ میں سے سور کا گوشت نکال کر انہیں وہ گوشت کھانے پر مجبور کیا۔

 

یاد رہے کہ بھارتی ریاست آسام میں گائے سمیت کسی بھی جانور کو ذبح کرنے کی کوئی پابندی نہیں تاہم ایسا کرنے کے لئے سرکاری سرٹیفیکیٹ لینا لازمی ہے۔ بھارت کی نام نہاز جمہوریت میں اقلیتوں خاص طور پر مسلمانوں پر زمین تنگ کی جا چکی ہے اور حالیہ برسوں میں گائے کا گوشت رکھنے یا کھانے کے الزامات لگا کر کئی مسلمانوں کو موت کے گھاٹ اتارا جا چکا ہے۔