مودی دوبارہ اقتدار میں آئے تو مسئلہ کشمیر حل ہو سکتا ہے: وزیراعظم عمران خان

ویب ڈیسک – وزیراعظم پاکستان عمران خان نے امید ظاہر کی ہے کہ اگر بھارت میں آنے والے الیکشنوں میں بھارتیہ جنتا پارٹی کی جیت ہوتی ہے تو اقتدار میں آنے کے بعد خطے میں امن اور کشمیر کے مسئلے پر کوئی معاہدہ ہو سکتا ہے۔ عمران خان نے یہ بیان ایک  غیر ملکی خبر رساں ادارے کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ بھارت میں آئندہ ہونے والے عام انتخابات کے بعد اگر بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) اقتدار میں آئی تو امن مذاکرات کے امکانات روشن ہو جائیں گے اور کشمیر کے دیرینہ مسئلے پر کوئی معائدہ بھی ہو سکتا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ کانگریس کے حکومت میں آنے سے بھارتی حکومت کے ساتھ امن مذاکرات کرنا مشکل ہو جائے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ اس بات سے انکار نہیں کیا جا سکتا کہ  مودی حکومت میں بھارتی مسلمانوں اور کشمیر کے مسلمانوں کے ساتھ اجنبیوں والا برتاؤ و سلوک ہورہا ہے۔

مسئلہ کشمیر پر بات کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ کشمیر سیاسی جدوجہد ہے اوراس کا کوئی فوجی حل ممکن نہیں ہے۔کشمیر میں جو کچھ بھی ہو رہا ہے وہ وہاں کے لوگوں کا ردِ عمل ہے۔ اس کا الزام پاکستان پر عائد  کرنے سے خطے میں  کشیدگی بڑھے گی۔  لیکن مجھے امید ہے کہ اگر مودی کی جماعت دوبارہ حکومت میں آئی تو کشمیر کا مسئلہ حل ہو سکتا ہے۔