30 سالہ اقتدار کا خاتمہ ،فوج نے سوڈانی صدر عمر البشیر کا تخہ الٹ دیا، اپنے ہی گھر میں قید

ویب ڈیسک – ایک اور افریقی اسلامی ملک میں اقتدار کی فوجی تبدیلی، ، سوڈان کی فوج نے 30 سال تک اقتدار میں رہنے والے صدر عمر البشیر کی حکومت کا تختہ الٹ دیا۔ سابق صدر کو عہدے سے معزول کرنے کے بعد انہیں کے گھر میں قید کر دیا گیا۔ عمر البشیر کے استعفےٰ کے بعد ملک بھر میں جشن عوام خوشیاں مناتی سڑکوں پر نکل آئی۔

تفصیلات کے مطابق سوڈان میں کئی ہفتوں سے صدر عمر البشیر کے خلاف احتجاج جاری تھا۔ صدر نے فوج کو مظاہرین کو منتشر کرنے کا حکم دیا تھا تاہم فوج نے یہ حکم تسلیم کرنے سے انکار کرتے ہوئے کہا تھا کہ ملک کے آئین اور انسانی حقوق کے منشور کے تحت عوام کو پرامن مظاہروں کا حق حاصل ہے۔

سئد

فوج نے ملکی امور چلانے کے لیے عمر البشیر کے نائب اور وزیر دفاع جنرل عوض بن عوف کی سربراہی میں عبوری کونسل تشکیل دے دی ہے۔ ملک کے کئی موجودہ اور سابق سرکاری حکام کو گرفتار کر لیا گیا ہے جن میں سابق وزیر دفاع عبد الرحیم محمد حسین، نیشنل کانگریس پارٹی کے نامزد سربراہ احمد ہارون اور عمر البشیر کے سابق نائب علی عثمان محمد اور ذاتی محافظین بھی شامل ہیں۔

عمر البشیر نے 1989ء میں سوڈان کے وزیراعظم صادق المہدی کی جمہوری حکومت کا تختہ الٹنے کے بعد ملک کی باگ ڈور سنبھالی اور سوڈان کے سیاہ وسفید کے مالک بن گئے تھے۔ عمر البشیر سوڈانی فوج میں کرنل کے عہدے پر فائز تھے۔