ٹیکس ایمنسٹی اسکیم سے کس کا کالا دھن سفید کرنا چاہتے ہیں؟ جہانگیر ترین کا یا علیمہ باجی کا؟ بلاول کا وزیراعظم سے سوال

ویب ڈیسک ۔ چئیرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے گھوٹکی میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ  اگر کٹھ پتلی حکومت نے 18 ویں ترمیم ختم کرنے کی کوشش کی تو دما دم مست قلندر ہو گا۔

تفصیلات کے مطابق  کٹھ پتلی نے کہا تھا کہ ایک کروڑ نوکریاں دیں گے، آج نوجوان بے روزگاری کا رونا رو رہے ہیں، یہ کیسی حکومت نے جس نے ایک سال کے دوران تین، تین بجٹ پیش کیے۔

بلاول بھٹو نے ٹیکس ایمنسٹی سکیم لانے پر حکومت کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا اور غیر اخلاقی زبان استعمال کرتے ہوئے کہا کہ  ایمنسٹی اسکیم سے آپ کس کا کالا دھن سفید کرنا چاہتے ہیں؟ جہانگیر ترین کا اپنایا علیمہ باجی کا؟ یہ اسکیم ٹیکس دینے والوں کے منہ پر تھپڑ ہے۔

انہوں نے وزیراعظم عمران خان پر طنز کے نشتر برساتے ہوئے کہا کہ یہ کہتے تھے کہ قرضہ نہیں لیں گے لیکن اب در در پر بھیک مانگنے جاتے ہیں، انہوں نے کہا تھا کہ خودکشی کرلوں گا لیکن آئی ایم ایف کے پاس نہیں جاؤں گا مگر ہراب آئی ایم ایف کی عوام دشمن شرائط پوری کرکے ڈالر، بجلی اور پیٹرول کی قیمتوں میں اضافہ کردیا۔