پیرس کے 800 سالہ تاریخی چرچ میں آگ لگ گئی، مرکزی مینار اور عمارت جل کر خاکستر

ویب ڈیسک – فرانس کے دارالحکومت پیرس کے نواح میں واقع 800 سال پرانے چرچ  نوٹرڈیم کیتھڈرل میں آگ لگ گئی۔ آگ سے چرچ کا مرکزی مینار اور عمارت مکمل طور پر جل تباہ ہو گئی۔

تفصیلات کے مطابق فرانس کے شہر پیرس کے 800 سال قدیم نوٹر ڈیم چرچ میں خوفناک آتشزدگی کے باعث عمارت مکمل طور پر تباہ ہو گئی۔ آتشزدگی کی وجہ سے گرجا گھر کی چھت اور مرکزی مینار گر گئے، عمارت مکمل طور پر جل گئی تاہم مرکزی ڈھاچے کو بچا لیا گیا۔

فرانسیسی حکام کے مطابق آگ کلیسا میں جاری تعمیرات کاموں کے دوران لگی۔ آگ بجھانے کے لئے پیرس شہر اور اس کے گردونواح سے آئی 400 سے فائربریگیڈ کی گاڑیوں نے حصہ لیا۔

فرانسیسی صدر نے چرچ کو دوبارہ اصل حالت میں بحال کرنے اور تعمیر نو کا اعلان کیا ہے۔

نوٹرڈیم چرچ گوتھک آرٹ کا شاہکار تھا ، اس تاریخی نوٹر ڈیم چرچ کی تعمیر 1160 میں شروع اور 1260 میں مکمل ہوئی، اس کی تعمیر میں 550 ٹن لکڑی اور 250 ٹن سیسہ استعمال کیا گیا۔ تاریخی نوٹر ڈیم کلیسا کی بلندی 305 فٹ ہے جب کہ نوٹر ڈیم کلیسا کا مخروطہ 1850 میں گرا کر نیا بنایا گیا تھا۔  اس تاریکی چرچ کو دیکھنے کے لئے دنیا بھر سے  ہر سال ایک کروڑ بیس لاکھ سیاح آتے تھے۔