مکران کوسٹل ہائی وے پر 14 افراد کا قتل، تانے بانے ایران سے جا ملے، پاکستان کا شدید احتجاج

ویب ڈیسک ۔ 18 اپریل کو ارماڑہ کے مقام پر مکران کوسٹل ہائی وے پر بسوں سے اتار کر 14افراد کے قتل کے تانے بانے ہمسایہ ملک ایران جا ملے، پاکستان نے دہشت گردوں کو پناہ دینے اور کارروائی نہ کرنے پر ایران سے شدید احتجاج کیا ہے۔ وزارت خارجہ نے اسلام آباد میں ایرانی سفارت خانے کو احتجاجی مراسلہ  بھیج دیا۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان نے اورماڑہ میں شہید ہونے والے 14 افراد کے قاتلوں کے خلاف کارروائی نہ کرنے پر ایران سے احتجاج کیا ہے۔  اس ضمن میں پاکستان کی وزارت خارجہ نے اسلام آباد میں ایرانی سفارت خانے کو احتجاجی مراسلہ بھی بھیجا ہے۔

وزارت خارجہ کے مطابق اس اندوہناک  واقعے کی ذمہ داری کالعدم تنظیموں کے ایک گروہ  نے قبول کی ہے  جس کے خلاف کارروائی کے لیے پاکستان نے پہلے بھی ایران سے کئی بار مطالبہ کیا۔

یاد رہے کہ کہ 18 اپریل کو ایف سی یونیفارم میں ملبوس 15 سے 20 دہشت گردوں نے بلوچستان کے علاقے اورماڑہ میں گوادر کے قریب 3 سے 4 بسوں کو روکا، یہ بسیں اورماڑہ سے گوادر کوسٹل ہائی وے پر سفر کر رہی تھیں جنہیں بوزی ٹاپ کے قریب روکا گیا، دہشت گردوں نے 14 افراد کو بسوں سے اتار کر قتل کردیا ۔