اورماڑہ حملہ کے بعد پاکستان کا ایران کے خلاف بڑا فیصلہ، پاک ایران سرحد پر باڑ لگائی جائے گی، شاہ محمود قریشی

ویب ڈیسک ۔ پاکستان کے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے آج وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں ایک اہم پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ اورماڑہ حملے کے تانے بانے ایران سے ملتے ہیں، اس واقعے کے بعد پاکستان پاکستان نے ایران سے شدید احتجاج کیا ہے اور پاکستان ایران کے ساتھ بارڈر پر باڑ لگائے گا۔

تفصیلات کے مطابق  اورماڑہ حملے کے حوالے سے اسلام آباد میں ہوئی ایک اہم پریس کانفرنس میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ ہمارے سپاہیوں کو جس بے دردری سے ہاتھ باندھ شہید کیا گیا اس پر پوری قوم کوغصہ ہے اور جاننا چاہتی ہے ایسا کس نے کیا۔

پاکستان میں ہالینڈ کا سفارتخانہ بند کر دیا گیا

وزیرخارجہ نے پریس کانفرنس میں بتایا کہ 18 اپریل کو صبح پاک ایران بارڈر سے 15 سے 20 دہشت گرد پاکستان میں داخل ہوئے جنہوں نے ایف سی کی وردی پہن رکھی تھی۔ دہشت گردوں نے کوسٹل ہائی وے پر بسوں کو روکا اور شناخت کے بعد 14 لوگوں کو شہید کیا۔ شہدا میں 10 جوان پاکستان نیوی کے تھے، تین کا تعلق ایئرفورس اور ایک کا تعلق کوسٹل گارڈز سے تھا۔

شاہ محمود نے بتایا کہ بی آر اے نے واقعے کی ذمہ داری قبول کی ہے جو مختلف بلوچ تنظیموں کا گروہ ہے اور اس تنظیم کے ٹریننگ کیمپ ایران کی حدود میں ہیں جس کے شواہد ایران کو مہیا کر دیے گئے ہیں۔ ایران کو ٹریننگ کمپس کی لوکیشن بھی بتائی ہے اور ہم توقع کرتے ہیں دونوں ممالک کے دیرینہ تعلقات کو مد نظر رکھتے ہوئے ایران اور افغانستان ان تنظیموں کیخلاف ایکشن لیں گے۔