پشاور میں پولیو قطرے پینے سے 60 بچوں کی حالت غیر، مشتعل افراد نے صحت مرکز کو آگ لگا دی

ویب ڈیسک – صوبہ پختونخواہ میں بڈھ بیر ماشو خیل کے ایک سکول میں پولیو ویکسین کے قطرے پینے سے 60 بچوں کی حالت غیر ہوگئی، بچوں کو فوری طور پر ہسپتال منتقل کر دیا گیا۔ مشتعل افراد اور والدین نے بنیادی صحت مرکز میں گھس کر توڑ پھوڑ کرنے کے بعد آگ لگا دی۔

تفصیلات کے مطابق پشاور کے نواحی علاقے بڈھ بیر ماشوخیل میں دارالقلم نامی سکول میں  بچوں کے پولیو کے قطرے پینے سے حالت گیر ہو گئی۔ بچوں کو فوری طور پر قریبی ہسپتال منتقل کر دیا گیا۔ پولیس کے مطابق قطرے پینے کے بعد بچوں نے سر چکرانے کی شکایت کی تھی، پولیو کے قطرے پینے سے 60کے قریب بچوں کی حالت خراب ہوئی۔

مقامی سکول میں پڑھانے والی ایک  ٹیچر کے مطابق پولیو ٹیموں نے سکول کے بچوں کو قطرے پلائے جس کے بعد بچوں کی حالت خراب ہوگئی اور انہیں فوری طور پر اسپتال منتقل کیا گیا۔

دوسری طرف ترجمان ایچ ایم سی کے مطابق حیات میڈیکل کمپلیکس میں 45 سے زائد بچے لائے گئے تاہم اب بچوں کی حالت خطرے سے باہر ہے۔

ایمرجنسی آپریشن سینٹر کے کوآرڈینیٹر وارڈینیٹر کامران آفریدی کا کہنا ہے کہ اسکول کے بچوں کی حالت پولیو ویکسین سے نہیں بگڑی بلکہ گرمی کی وجہ سے خراب ہوئی، پولیو ویکسین میں مسئلہ ہوتا تو صرف ایک اسکول کے اندر ہی بچوں کی حالت کیوں خراب ہوتی۔

انہوں نے مزید کہا کہ سکول انتظامیہ پہلے ہی بچوں کو پولیو ویکیسن دینے کے خلاف تھی، سکول پرنسپ نے ہم سے اس بات پر جھگڑا بھی کیا تھا۔

واقعے کی اطلاع ملتے ہیں مشتعل افراد نے بنیادی صحت مرکز کا گھیراوٴ کر لیا اور توڑ پھوڑ کرنے کے بعد اسے نذر آتش کر دیا۔