3 دہائیوں بعد خاتون کی کومے سے واپسی، اٹھتے ہی زبان پر قرآنی آیات کا ورد جاری، دور جدید کی میڈیکل سائنس کا ریکارڈ قائم

ویب ڈیسک ۔ جرمنی میں میڈیکل سائنس کا ایک معجزہ اس وقت دیکھنے میں آیا 27سال قبل کومے میں جانے والی عرب امارات کی خاتون زندگی میں واپس لوٹ آئیں۔ تقریباً تین دہائیوں بعد کومے سے واپسی ایک انہونہ واقع کہا جا رہا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ماراتی اخبار الیوم کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ  خاتون منیرہ عمر عبداللہ 1991 میں ٹریفک حادثے کے باعث کومہ میں چلی گئی تھیں، جس کے بعد وہ 27 سال تک جرمنی کے ایک ہسپتال میں کومے کی حالت میں رہیں، ان کے  ہوش میں آنے پر ڈاکٹرز حیران رہ گئے ہیں۔

اخبار کی رپورٹ کے مطابق متحدہ عرب امارات سے تعلق رکھنے والی خاتون کا مقامی اسپتالوں کے علاوہ بیرون ملک کے اسپتالوں میں بھی علاج کرایا گیا تھا۔

الیوم کے مطابق 27 سال تک عالم رنگ وبو سے بے خبر رہنے والی خاتون نے آنکھ کھولتے ہی بیٹے کو آوازیں دینا شروع کیں اور پھر ان کی زبان پر قرآنی آیات اور دعائیں جاری ہوگئیں۔

منیرہ عمر عبداللہ کے بیٹے عمر احمد کے مطابق وہ اپنی والدہ کے ساتھ 1991 میں العین شہر سے واپس آ رہے تھے کہ راستے میں ان کا ایکسیڈنٹ ہوگیا تھا۔

ٹریفک حادثے کی وجہ سے انہیں شدید چوٹیں آئیں اور ان کا کافی خون بھی بہا تھا جس کے بعد  وہ بے ہوش ہوگئی تھیں۔ ان کا کہنا تھا کہ جب کافی دن تک والدہ ہوش میں نہیں آئیں تو ڈاکٹروں نے کہا کہ وہ دماغی طور پر انتقال کرچکی ہیں اوران کے بچنے کے امکانات نہیں ہیں لیکن ہم مایوس نہیں تھے۔