بھٹو کے شہر لاڑکانہ میں ایڈز بچوں کی زندگیاں نگلنے لگا، اعداد و شمار جان کر آپ سر پکڑ لیں گے

ویب ڈیسک ۔ بھٹو خاندان نے کئی سال تک پاکستان پر حکومت کی لیکن بھٹو خاندان اپنے آبائی شہر کے حالات سے بے خبر رہا، لاڑکانہ شہر کا شمار آج بھی پاکستان کے پسماندہ ترین شہروں میں ہوتا ہے۔

میڈیا رپورٹس میں انکشاف ہوا ہے کہ بھٹو خاندان کے آبائی شہر لاڑکانہ میں ایڈز جیسی موضی بیماری تیزی سے پھیلنے لگی ہے۔ صرف رتو ڈیرو میں ایک ماہ کے دوران 3 بچے ایڈز سے جاں بحق ہو چکے ہیں جبکہ 15 میں سے 12 بچوں میں ایڈز وائرس کی تصدیق ہو گئی ہے۔

رتو ڈیرو کے مقامی ڈاکٹر نےمیڈیا کو بتایا کہ ان کے کلینک پر لائے گئے بچوں کی قوت مدافعت پر انہیں تشویش تھی جس کی تصدیق لیبارٹریوں نے بھی کر دی۔

سندھ بھر میں بہترین طبی سہولیات کی دعوے دار سندھ حکومت لاڑکانہ میں پھیلنے والی ایڈز کی بیماری سے بے خبر نظر آتی ہے اور اب تک اس معاملے پر حکام بالا کی خاموشی معنی خیز ہے۔