نیب چلے گا یا پھر پاکستان کی معیشت، دونوں ایک ساتھ نہیں چکل سکتے: آصف زرداری

ویب ڈیسک – اسلام آباد میں نیب عدالت میں پیشی کے بعد سابق صدر آصف علی زرداری نے میڈیا نمائندگان سے بات کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں نیب چلے گا یا معشیت، یہ دونوں اس ملک میں ایک ساتھ نہیں چل سکتے۔

تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت میں میں جعلی بنک اکاوٴنٹس کیس میں ضمانت میں توسیع کی درخواست سماعت کے بعد پیپلزپارٹی کے شریک چئیرمین آصف علی زرداری نے کہا کہ پاکستان میں نیب اور معشیت ایک ساتھ نہیں چل سکتے۔ انہوں نے پشین گوئی کی تحریک انصاف کی حکومت اپنی مدت پوری نہیں کرے گی۔

آصف علی زرداری نے جمعیت علما اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کی حکومت کے خلاف تحریک کا حصہ بننے کا اعلان بھی کر دیا۔

سابق صدر پاکستان اور پیپلزپارٹی کے شریک چئیرمین آصف علی زرداری کے گرد گھیرا تنگ ہونے لگا، آصف زرداری کا جعلی اکاوٴنٹس کیس میں بری طرح پھنس چکے ہیں اور ان کا بچنا تقریباً ناممکن ہو چکا ہے۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق جعلی اکاؤنٹس اور منی لانڈرنگ کیس میں پیپلز پارٹی کے شریک چیرمین آصف علی زرداری کیخلاف دو خواتین بینک افسران نورین اور کرن کے بعد تیسرا ملزم شیر محمد بھی آصف زرداری کیخلاف وعدہ معاف گواہ بن گئے ہیں جس کے بعد سابق صدر کا اس کیس میں بچنا ناممکن نظر آرہا ہے۔

اس سے قبل نیب نے جعلی اکاﺅنٹس کیس میں مبینہ ملوث ہونے پر 2 سابق بینکاروں کو گرفتار کرلیاہے. رپورٹ کے مطابق نیب راولپنڈی کے مطابق بڑے نجی بینک کے 2 عہدیداروں شیر علی اور محمد فاروق عبداللہ سابق صدر آصف زرداری کی پارک لینک اسٹیٹ کی فرنٹ کمپنی پرتھینن پرائیویٹ لمیٹڈ کے لیے قرض بڑھانے میں مبینہ طور پر ملوث تھے۔

یاد رہے کہ سابق صدر آصف علی زرداری اور ان کی ہمشیرہ فریال تالپور کے خلاف جعلی بنک اکاوٴنٹس اور منی لانڈرنگ کے کیس چل رہے ہیں۔ آصف زرداری اور فریال تالپور آج اسلام آباد کی احتساب عدالت میں پیش ہوئے۔ جہاں وہ اپنی ضمانت میں توسیع کیس کی سماعت سنیں گے۔ اس موقع پر عدالت میں سخت سیکیورٹی کے انتظامات کئے گئے ہیں۔