کیا ہم پی ٹی ایم قیادت کو ٹاک شوز پر بلا سکتے ہیں؟ حامد میر کو ڈی جی آئی ایس پی آر کا کرارا جواب

ویب ڈیسک – ویب ڈیسک – پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ نے آج راولپنڈی میں ایک اہم پریس کانفرنس کی۔ اس دوران سنئیر صحافی حامد میر نے ڈی جی آئی ایس پی آر سے سوال کیا کہ کیا ہم پی ٹی ایم قیادت کو ٹاک شوز پر بلا سکتے ہیں؟

پریس کانفرنس کے دوران سینئر صحافی و تجزیہ کار حامد میر نے اپنے سوال کا آغاز شکریہ کیساتھ کرتے ہوئے کہا ”مجھے آپ کا شکریہ ادا کرنا کہ بہت عرصے سے پاکستان میں سیاسی قوتیں اور آزادی پسند صحافی جو بات کہتے تھے کہ 1971ءمیں پاکستان کا میڈیا آزاد ہوتا تو شائد پاکستان نہ ٹوٹتا، آپ نے بہت کھلے الفاظ میں ہمارے موقف کی تائید کی ہے۔ اس شکریہ کیساتھ سوال یہ ہے کہ نامعلوم افراد کا معاملہ صرف خیبرپختونخواہ میں ہی نہیں بلکہ بلوچستان کے علاوہ اور جگہ پر بھی ہے، انہوں نے 2018ءمیں ان کی بات کر نا شروع کی ہے مگر بہت سے لوگ ایسے ہیں جو 2005-06 سے بات کر رہے ہیں۔ جو سوالات آپ نے کئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کیا یہ مناسب نہیں کہ پی ٹی ایم کی لیڈرشپ کو الیکٹرانک میڈیا پر بلایا جائے اور ان سے یہ سوالات کئے جائیں تاکہ وہ جو الزامات لگاتے ہیں کہ ڈی جی آئی ایس پی آر میڈیا پر ہمیں کوریج نہیں ملنے دیتے اور ہم پر بڑی پابندیاں ہیں، یہ تاثر بھی ختم ہو اور ان باتوں کا وہ کوئی جواب بھی دیں گے ۔اس پر ڈی جی آئی ایس پی نے کیا جواب دیا؟ ویڈیو دیکھں۔