بھارت: حکمران انتہا پسند جماعت بی جے پی کے رکن نے چرچ میں گھس کر پادری کا سر پھاڑ دیا، ویڈیو وائرل

ویب ڈیسک ۔ نام نہاد سیکیولر بھارت کا انتہا پسند چہرہ ایک مرتبہ پھر بے نقاب  ہو گیا، ہندو انتہا پسند  حکمران جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی کے رکن کا دعائیہ تقریب کےدوران چرچ میں گھُس کر پادری پر تشدد، دعا کرواتے پادری کا سر پھاڑ ڈالا۔

تفصیلات کے مطابق بھارتی شہر بنگلورو میں بھارت کی حکمران جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی (پی جے پی) کے رکن نے مقامی چرچ میں گھس کر ہنگامہ آرائی شروع کر دی ۔ ہندو انتہا پسند کی ہنگامہ آرائی کے وقت چرچ میں دعائیہ تقریب جاری تھی اور پادری دعا کروا رہے تھے کہ تب انتہا پسند بی جے پی رکن نے آگے بڑھ کر پادری سے مائیک چھیننا چاہا، پادری کی جانب سے مزاہمت کی گئی لیکن بی جے پی رکن نے مائیک چھین کر پادری کے سر اور منہ پر زور زور سے مارنا شروع کر دیا۔

تشدد زدہ پادری کے منہ اور سر سے خون بہنے لگا، چرچ میں موجود چند لوگوں نے انتہا پسند ہندو کو روکنا بھی چاہا تاہم پادری پر اچانک حملے سے چرچ میں افراتفری مچ گئی اور خواتین و بچے ڈر کر وہاں سے بھاگنے لگے۔

دنیا کی سب سے بڑی نام نہاد جمہوریت بھارت میں اقلیتوں کو کوئی تحفظ حاصل نہیں۔ بھارت میں اقلیتوں خاص طور پر مسلمانوں پر آئے دن حملے کئے جاتے ہیں جن میں اب تک درجنوں مسلمان اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں۔