پنجاب حکومت کیلئے تاریخی دن، اسمبلی میں بلدیاتی نظام کا مسودہ قانون اکثریت سے منظور

ویب ڈیسک ۔ پنجاب میں تحریک انصاف کی حکومت نے ایک تاریخی کامیابی حاصل کر لی، آج پنجاب اسمبلی میں بلدیاتی نظام کا مسودہ قانون اکثریت سے منظور کر لیا گیا۔ اپوزیشن جماعتوں ایک نہ چل سکی۔ منظوری کے لئے آج ہی گورنر پنجاب کو بھیج بھی دیا گیا۔

تفصیلا ت کے مطابق آج پنجاب اسمبلی میں بلدیاتی نظام کا مسودہ قانون اپوزیشن کی جانب سے شور شرابے کے باوجود  اکثریت سے منظور کر لیا گیا اور اسے منظوری کے لئے آج ہی گورنر پنجاب چودھری سرور کو بھیج دیا گیا۔ نئے مسودہ قانون کی گورنر سے منظوری اور گزٹ نوٹیفیکشن ہوتے ہی بلدیاتی ادارے تحلیل ہو جائیں گے۔ پنجاب حکومت کے مطابق بلدیاتی اداروں کا ایک سال کے اندر انتخاب کرایا جائے گا، نئے انتخاب تک بلدیاتی اداروں میں ایڈمنسٹریٹر مقرر ہوں گے۔

نئے قانون کے تحت شہروں میں میونسپل اور محلہ کونسل جبکہ دیہات میں تحصیل اور ویلیج کونسل قائم کی جائیں گی، ویلیج کونسل اورمحلہ کونسل میں فری لسٹ الیکشن ہوگا اور زیادہ ووٹ لینے والا چیئرمین ہو گا جبکہ زیادہ سے کم ووٹ کی طرف عہدوں کی بالترتیب نمائندگی ہو گی۔

اپوزیشن نے بل کی منظوری کے خلاف ایوان کے اندر  بنچوں پر کھڑے ہو کر بھرپور احتجاج کیا، ترامیم مسترد ہونے پر ایجنڈے کی کاپیاں پھاڑ دیں اور ایوان میں شور شرابا کرتے ہوئے نیا بلدیاتی نظام نامنظور کے نعرے بھی لگائے۔