شہباز شریف کی وطن واپسی پر سوالیہ نشان، ن لیگ کا پارلیمانی لیڈر کی ذمہ داری خواجہ آصف کے سپرد کرنے کا فیصلہ

ویب ڈیسک – مسلم لیگ ن کو پارلیمنٹ میں موجودگی پر شک ہونے لگا، صدر مسلم لیگ ن اور اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کے لندن جانے کے بعد ن لیگ پارلیمنٹ میں غیر فعال ہوتی نظر آرہی ہے جس پر ن لیگ کے بڑوں نے سر جوڑ لئے اور اسمبلی میں پارلیمانی لیڈر کا عہدہ کسی فعال شخص کو دینے پر غور کیا جانے لگا اور اس ضمن میں قرعہ سابق وزیردفاع خواجہ آصف کے نام نکلنے کا امکان ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق مسلم لیگ ن کے صدر اور اپوزیشن لیڈر شہباز شریف پاکستانی عدالتوں سے ضمانت ملنے کے بعد لندن روانہ ہوچکے ہیں اور ان کا فی الحال جلد وطن واپسی کا کوئی امکان بھی نہیں جس کی وجہ سے مسلم لیگ ن سیاسی حلقوں میں شدید تشویش پائی جا رہی ہے۔ پارلیمانی سیاست میں بھی اس وقت اپوزیشن جماعت پیپلزپارٹی ہی چھائی ہوئی ہے۔ ایسے میں مسلم لیگ کے قائم مقام پارلیمانی لیڈر رانا تنویر حسین بھی غیر فعال نظر آرہے ہیں جس کے بعد ن لیگ کے مقتدر حلقوں نے کسی فعال اور تگڑے رہنما کو ن لیگ کا پارلیمانی لیڈر چننے کی سوچ لی ہے۔ امید کی جا رہی ہے ن لیگ کے اگلے پارلیمانی لیڈر خواجہ آصف ہوں گے۔

خواجہ آصف جو کہ ن لیگ کی پچھلے دور حکومت میں وزیر دفاع بھی رہ چکے ہیں پارلیمانی سیاست میں کافی متحرک رہتے ہیں اور حکومت کو ٹف ٹائم بھی دیتے رہتے ہیں۔ ایسے میں خواجہ آصف کا پارلیمانی لیڈر بننا مسلم لیگ ن کی سیاست میں نئی روح پھونک سکتا ہے۔