ملک کو فوج نہیں عوام متحد رکھتے ہیں: وزیراعظم عمران خان

ویب ڈیسک – وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ کسی بھی ملک فوج متحد نہیں رکھ سکتی، یہ عوام ہوتی ہے جو ملک کو متحد رکھتے ہیں۔ قومیں نظریے سے بنتی ہیں جس قوم سے نظریہ ختم ہو جائے وہ قومیں بھی ختم ہو جاتی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے سوہاوہ میں القادر یونیورسٹی کے سنگ بنیاد کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کا نظریہ پیچھے چلا گیا جس کی وجہ سے پاکستان دو ٹکڑے ہوا انہوں نے کہا کہ  بھٹو کےبعدجتنےبھی حکمران آئے انہوں نے صرف لندن میں پراپرٹیز بنائیں، دراصل پاکستان نے اسلامی فلاحی ریاست بننا تھا آج یہ وہ پاکستان نہیں جو اس کو بننا چاہیے تھا، ملک کو بنانے کیلیے جو سوچ تھی اس کو سیاسی قیادت نے دفن کر دیا، نظریہ ختم ہوتو قوم ہی ختم ہوجاتی ہے، ملک کو فوج نہیں عوام متحد رکھتے ہیں۔

عمران خان نے کہا کہ علامہ اقبال نے دین کے ساتھ ساتھ مغربی فلسفے پڑھے وہاں کے اسکالرز سے ملے ،شاعر مشرق کی  90 سال پہلے کی باتیں اور کلام سے ایسالگتا ہے کہ وہ آج ہمارے لیے باتیں کررہے ہیں کیونکہ انہیں سائنس کا بھی پتہ تھا،آج بدقسمتی سے زیادہ تر سیاست دانوں کو  اپنی پڑی ہوتی ہے کہیں سے ترقیاتی فنڈ مل جائے ہمیں ایک بڑی سوچ والے لیڈرز کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ  کہا کہ ہم اسکولوں میں  بچوں کو نظریہ پاکستان اور ریاست ِ مدینہ سے متعلق بتائیں گے تاکہ  کم از کم آنے والے نسلوں کو دین کی حقیقی تعلیم دے سکیں، اگر ہم پاکستان بننے کے حقیقی مقصد کے بارے میں نہ پڑھا سکے تو مغربی کلچر کا مقابلہ کرنا   مشکل ہوگا۔