نوازشریف کل افطاری کے بعد گرفتاری دیں گے، کارکن جلوس کی شکل میں جیل چھوڑنے جائیں گے: ن لیگ

ویب ڈیسک – سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ ن کے تاحیات صدر میاں محمد نوازشریف کی ضمانت آج ختم ہو رہی  جس کے بعد وہ کل بروز منگل افطاری کے بعد خود کو جیل حکام کے حوالے کر دیں گے۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ آف پاکستان کی جانب سے نوازشریف کو طبی بنیادوں پر دی جانے والی  6 ہفتوں کی ضمانت کا آج آخری دن جس کے بعد کل نوازشریف کو دوبارہ کوٹ لکھپت جیل منتل کر دیا جائے گا۔ مسلم لیگ ن کے اعلامیے کے مطابق سابق وزیراعظم کا جلوس کی شکل میں کل افطاری کے بعد کوٹ لکھپت جیل حکم کے حوالے کر دیا جائے گا۔

نوازشریف کو جیل چھوڑ نے جانے والے جلوس کا روٹ بھی طے کر دیا گیا ہے جو جاتی امرا سے شروع ہو کر  اڈا پلاٹ، رنگ روڈ سےہوتا ہوا کوٹ لکھپت جیل تک جائے گا۔ نوازشریف کو جیل لے جانے والے روٹ پر سیکیورٹی کے سخت انتظامات کئے جائیں گے۔

جیل روانگی سے قبل آج نوازشریف نے لاہور میں داتا دربار پر حاضری بھی دی اور دعا کی۔ نوازشریف نے اس موقع پر کہا کہ جیل اور قید عوام کے ساتھ میرا رشتہ نہیں توڑ سکتے۔

ادھر جیل کوٹ لکھپت جیل میں بھی نوازشریف کی آمد کے پیش نظر تیاریاں شروع کر دی گئی ہیں۔ جیل حکام کے مطابق نوازشریف کو ان کی پرانی بیرک میں ہی رکھا جائے گا۔ بیرک کی صاف صفائی بھی کی جا چکی ہے۔

نواز شریف کو جیل میں ٹی وی، اخبار، کتب اور گھر کے کھانے کی سہولیات میسر ہوں گی جبکہ ہفتے میں ایک دن ان کو قریبی لوگوں ملنے کی بھی اجازت ہو گی۔