فواد چودھری نے جو کہا کر دکھایا، چاند دیکھنے والی رویت ہلال کمیٹی کی چھٹی، اب جدید سائنسی کیلنڈر تیار ہو گا

ویب ڈیسک – وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چودھری نے چند روز پہلے ملک میں ہر سال رمضان اور عیدالفطر کا چاند دیکھنے پر پیدا ہونے والے تنازع کے حوالے سے بیان دیا تھا کہ آنے والے دور میں چاند کی رویت کا فیصلہ سائنسی طریقوں پر کیا جائے گا، انہوں نے اس بات پر اعتراض بھی کیا تھا کہ ایک چاند دیکھنے کےلئے 40 لاکھ روپے تک کا خرچہ کرنا کہاں کی دانشمندی ہے۔

تاہم اب وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چودھری نے جو کہا کر کے دکھا دیا اور وزارت سائنس اینڈ ٹیکنالوجی نے قمری کیلنڈر کی تیاری کیلئے کمیٹی تشکیل دے کر باقاعدہ نوٹیفیکیشن بھی جاری کردیاہے ۔  کمیٹی میں وزارت سائنس اینڈ ٹیکنالوجی ، کامسیٹس ، محکمہ موسمیات اور سپارکو کے نمائندے شامل کیے گئے ہیں۔


فواد چوہدری نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ چاند کے تنازعے کو حل کرنے کیلئے کمیٹی بنائی ہے۔  فواد چوہدری نے اپنے پیغام کے ساتھ کمیٹی کے قیام کا نوٹفیکیشن بھی شئیر  کیا ہے۔

وزارت سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کے ایڈوائزر ڈاکٹر محمد طارق مسعود کمیٹی کے کنوینئر ہونگے۔ کامسٹیس یونیورسٹی اسلام آباد کے میٹ ڈیپارٹمنٹ  کے لیکچر ر وقار احمد محکمہ موسمیات کے ڈپٹی ڈائریکٹرز ندیم فیصل اورابو نسان بھی کمیٹی میں شامل ہیں۔  اسپارکو کے نمائندے غلام مرتضی  کو بھی کمیٹی کا حصہ بنایا گیاہے۔

یاد رہے کہ اس سال بھی چاند کی رویت کے مسئلے پر ملک دو حصوں میں تقسیم رہا، پشاور اور کے پی کے کئی علاقوں میں کل پہلا روزہ رکھا گیا جبکہ  باقی ملک میں آج پہلا روزہ ہے۔