حکومت نے آئی ایم ایف کے سامنے گٹنے ٹیک دیئے، بجلی اور گیس مہنگا کرنے کی سخت شرائط بھی مان لیں

ویب ڈیسک ۔ اگر مجھے آئی ایم ایف کے پاس جانا پڑا تو خودکشی کر لوں گا، یہ الفاظ تھے وزیراعظم پاکستان عمران خان کے حکومت میں آنے سے پہلے کے تاہم اب حالات اور پوزیشن بدل چکی ہے اپوزیشن میں رہتے ہوئے گرجنے برسنے والے عمران خان نے اب آئی ایم ایف کے سامنے گٹنے ٹیک دیئے ہیں اور بجلی اور گیس مہنگا کرنے جیسی سخت شرائط بھی مان لی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق تحریک انصاف کی حکومت نے آخر کار کئی مہینے کے ہیلے بہانوں کے بعد آئی ایم ایف سے قرض لینے کی خاطر ان کی سخت شرائط مان لی ہیں جن میں عوام پر مزید بو بجلی اور گیس کی مد میں 340 ارب روپے تین سال میں صارفین کی جیبوں سے نکالے جائیں گے۔ حکومت نیپرا کو بجلی کی قیمت کے تعین کے لیے خود مختار بنانے کے لیے رضامند ہو گئی ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ حکومت کی جانب سے چھوٹے صارفین کے علاوہ سب کے لیے سبسڈی ختم کرنے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے۔ آئی ایم ایف کا وفد 29 اپریل 2019 کو پاکستان آیا تھا اور وزارت خزانہ کے حکام کیساتھ تکنیکی بنیادوں پر مذاکرات جاری تھے۔