ڈھول اور سائرن کا زمانہ ہوا پرانا، سحری میں لوگوں کو جگانے کیلئے جنگی جہازوں کا استعمال ہوگا

ویب ڈیسک ۔ انڈونیشیا کی حکومت نے رمضان المبارک کے دوران سحری کے وقت لوگوں کو جگانے کا ایک انوکھا طریقہ کار اپنایا ہے، سحری کے اوقات میں انڈونیشیا کی فضائوں مین جنگی جہاز اپنی پوری گھن گرج سے پرواز کریں گے اور لوگوں کو سحری کے لئے بیدار کریں گے۔

تفصیلات کے مطابق انڈونیشیا کی ایئرفورس نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ایک ٹویٹ کے ذریعے اعلان کیا ہے کہ ماہ رمضان کے دوران لوگوں کو سحری کے وقت جگانے کے لیے وہ جنگی جہاز استعمال کرے گی۔

انڈونیشیائی ائیر فورس کا کہنا تھا کہ مشرقی جاوا، سوراکارتا، کلاٹن اور سراجین سمیت دیگر کئی شہروں میں جیٹ فائٹرز کی مشقیں سحری کے وقت کی جائیں گی تاکہ شہریوں کو روزے کے لیے جگایا جا سکے۔ ٹویٹ میں کہا گیا کہ انشااللہ ہم جنگی جہازوں کے ذریعے سحری کے لیے لوگوں کو جگانے کی روایت قائم رکھیں گے۔

یاد رہے کہ دنیا بھر میں سحری کے اوقات میں روزہ داروں کو جگانے کے لیے  دروازہ بجا کر،  ڈھول بجا کر صدا لگا کر اور سائرن بجا کر لوگوں کو بیدار کیا جاتا ہے تاہم سحری میں بیدار کرنے کے لیے جیٹ فائٹرز طیاروں کا استعمال پہلی بار کیا جا رہا ہے جو ایک اپنی نوعیت کا ایک انوکھا طریقہ ہے۔