کیا پاکستان کی قسمت بدلنے والی ہے؟ کراچی کے سمندر میں ڈرلنگ مکمل ہوتے ہی اہم خبر آگئی

ویب ڈیسک – پاکستان کی قسمت بدلنے والی ہے، کراچی کے سمندر میں گہرے پانی میں تیل کے ذخائر کیلئے کی جانے والی ڈرلنگ 4 ماہ کے طویل عرصے بعد مکمل کر لی گئی ہے۔ ڈرلنگ کرنے والی کمپنیوں نے کراچی سمندر کے نیچے تیل کے ذخائر کا تخمینہ لگانا شروع کر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق کراچی کےگہرے سمندر میں کیکڑا ون بلاک میں ڈرلنگ کا انتہائی مشکل عمل 4 ماہ کے طویل عرصے بعد مکمل ہوگیا، ڈرلنگ مکمل ہونے کے بعد آئندہ 48 گھنٹے انتہائی اہم ہیں۔ ماہرین نے  تیل و گیس کی مقدار کا تخمینہ لگانا شروع کر دیا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق 5 ہزار 470 میٹر گہرائی تک ڈرلنگ کی گئی، ٹیسٹنگ کا عمل 48 سے 72 گھنٹوں میں مکمل ہوگا، تیل و گیس کی مقدار کی مکمل رپورٹ ایک ہفتے میں تیار ہوگی، بڑے ذخائر کی موجودگی کی رپورٹ کنفرم ہونے پر انفراسٹرکچر بنایا جائے گا۔وزیر بحری امور علی زیدی کے مطابق کئی ماہ سے جاری ڈرلنگ کا عمل مکمل کر لیا گیا، ایگزون موبائل 5500 میٹر تک ڈرلنگ کر چکی، اب بلو آوٹ پریشر چیک کیا جا رہا ہے، 10 روز میں صورتحال واضح ہو جائے گی۔ابتدائی اندازے کے مطابق کیکڑا ون بلاک میں 9ٹریلین کیوبک فٹ گیس اور خام تیل کی بڑی مقدار موجود ہو سکتی ہے ۔

یاد رہے کہ کراچی کے سمندر میںکیکڑا ون بلاک میں تیل وگیس کی تلاش کے لیے 11جنوری 2019ء کو شروع کی گئی تھی۔ اس منصوبے میں ای این آئی، ایگزن موبل، اوجی ڈی سی ایل اور پی پی ایل اس کنویں میں 25 فیصد کے تناسب سے ملکیت رکھتی ہیں اور اسی تناسب سے چاروں کمپنیوں نے مشترکہ سرمایہ کاری کی ہے ۔