ایرانی حمایت یافتہ حوثی باغیوں کا مکہ پر میزائل حملہ، پاکستان کی شدید مذمت

ویب ڈیسک – سعودی عرب کے مقدس شہر مکہ پر ایرانی حمایت یافتہ حوثی باغیوں کا بیلسٹک میزائل حملہ ناکام بنا دیا گیا۔ پاکستان نے مکہ کو میزائل نشانہ بنانے کی شدید مذمت کی ہے اور سیکیورٹی فورسز کی جانب حوثیوں کا میزائل مار گرانے پر شاندار تعریف کی۔

تفصیلات کے مطابق یمن میں جاری حوثی باغیوں اور سعودی اتحاد کے درمیان جنگ کے اثرات اب حجاز مقدس تک آنے لگے ہیں۔ حوثی باغیوں کی جانب سے سعودی عرب پر 2 بیلسٹک میزائل داغے گئے جنہیں سعودی ائیر ڈیفنس نظام نے فضا میں ہی تباہ کر دیا۔ سعودی حکام کی جانب سے دی گئی بریفنگ کے مطابق ایک میزائل جدہ جبکہ دوسرا مکہ کی جانب آرہا تھا جنہیں بروقت کارووائی کرتے ہوئے فضا میں ہی تباہ کر دیا گیا۔ سعودی اتحادی افواج کے ترجمان نے بتایا کہ دونوں میزائلوں کو جدہ اور طائف کی حدود میں مار گرایا تاہم واشنگٹن میں واقع سعودی سفارت خانے کی ٹوئٹ میں دونوں میزائلوں کو مکہ صوبے کی حدود میں نشانہ بنانے کا دعویٰ کیا گیا۔

دوسری جانب حوثی باغیوں کے ترجمان یحیٰ ساریہ نے سعودی دعوے کی سخت الفاظ میں تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ مکہ کی جانب کوئی میزائل فائر نہیں کیا گیا۔ سعودی حکومت عوام کی ہمدردی حاصل کرنے کیلیے جھوٹا دعویٰ کر رہی ہے۔

پاکستان کی جانب سے سعودی عرب پر میزائل حملوں کی شدید مذمت کی گئی ہے۔ دفتر خارجہ کی جانب سے جاری کئے گئے بیان میں کہا گیا ہے کہ حرمین شریفین کی موجودگی کے باعث سعودی عرب پوری دنیا کے مسلمانوں کا محور و مرکز ہے۔ پاکستان کے عوام کے دل سعودی عوام کے ساتھ دھڑکتے ہیں۔ کسی بھی مشکل گھڑی میں برادر اسلامی ملک کو تنہا نہیں چھوڑیں گے۔

یاد رہے کہ سعودی عرب ایران پر الزام لگاتا آیا ہے کہ وہ یمن میں موجود حوثی باغیوں کو جدید اسلحہ فراہم کر رہا ہے اور حوثیوں کی صفوں میں ایرانی تربیت یافتہ جنگجو شامل ہیں جو یمن میں اتحادی افواج پر حملوں کے علاوہ سعودی عرب کے اندر حملوں میں ملوث ہیں۔ ایران سعودی عرب کے درمیان جاری کشیدگی کی وجہ سے خطہ عرب اس وقت شدید خطرات سے دوچار ہے۔

تبصرہ کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *