مجھے تو مکی آرتھر کی فکر ہے، ابھی باب وولمر کا غم نہیں بھولے : فواد چودھری

ویب ڈیسک ۔ قومی کرکٹ ٹیم نے گذشتہ روز ذلت و رسوائی کی ایک نئی تاریخ رقم کی اور افغانستان جیسے کمزور حریف کے ہاتھوں تین وکٹوں سے شکست کھائی۔ گوکہ یہ ایک وارم اپ میچ تھا لیکن پاکستان اپنی پوری قوت کے ساتھ میدان میں اترا تھا پھر بھی افغان ٹیم سے شکست نے پاکستان ٹیم کی ورلڈکپ تیاریوں پر سوالیہ نشان لگا دیا ہے۔

پاکستان ٹیم کی اس ہار پر جہاں سوشل میڈیا پر شدید تنقید کی جارہی ہے وہی وفاقی وزیرسائنس و ٹیکنالوجی فواد چودھری نے ایک طنزیہ ٹویٹ کرتے ہوئے قومی ٹیم کی شکست پر تبصرہ کیا۔ فوا چودھری نے زیادہ تو کچھ نہیں کہا بس اتنا پیغام دیا کہ ’’ابھی باب وولمر کا غم نہیں بھولے، مجھے تو مکی آرتھر کی فکر ہے‘‘ گویا فواد چودھری نے کچھ بھی نہ کہا اور بہت کچھ کہہ بھی گئے۔

یاد رہے کہ 2007کے ورلڈکپ میں پاکستان کے کوچ آنجہانی باب وولمر تھے۔ پاکستان کی آئرلینڈ کے ہاتھوں شرمناک شکست کے بعد پاکستانی کوچ باب وولمر اپنے کمرے میں مردہ پائے گئے تھے۔ پوسٹ مارٹم رپورٹ میں باب کی موت کی وجہ شدید ذہنی دباوٴ بتایا گیا تھا۔

گزشتہ روز افغانستان نے پہلے تو پاکستان کو 48اووروں میں صرف 262رنز پر آوٴٹ کیا اور پھر پاکستانی باوٴلروں کی خوب درگت بناتے ہوئے 262رنز کا ہدف بھی پورا کر لیا تھا۔ جس پر شائقین کرکٹ میں شدید مایوسی پھیل گئی ہے۔ اور ورلڈکپ کی دیگر حریف ٹیموں کو دیکھا جائے تو وہ نہایت مضبوط ٹیمیں ہیں اور پاکستان کا تو اللہ ہی حافظ ے۔