لاڑکانہ کے بعد گجرات میں ایڈز کے 2000 سے زائد کیسز سامنے آگئے

ویب ڈیسک – پاکستان میں ایچ آئی وی ایڈز خطرناک حد تک پھیلنا شروع ہو گیا ہے، سندھ کے شہر لاڑکانہ میں ایڈز کے سینکڑوں مریض منظر عام آنے کے بعد پنجاب کے شہر گجرات میں 2000 سے زائد ایچ آئی وی ایڈز کے مریض سامنے آگئے جن میں 120 کے قریب بچے بھی شامل ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ملک میں ایچ آئی وی ایڈز کے مریضوں کی تعداد میں خطرناک حد تک اضافہ ہوتا جا رہا ہے اور ہر گزرتے دن کے ساتھ ایک نیا انکشاف ہو رہا ہے۔  صوبہ سندھ کے بعد پنجاب میں بھی ایچ آئی ایڈز سر اٹھانے لگا ہے۔ایک رپورٹ کے مطابق ضلع گجرات میں اب تک 2000 سے زائد افراد میں ایج آئی وی ایڈز کے وائرس کی تشخیص ہوئی ہے۔ ان میں سے 120 سے زائد بچے بھی شامل ہیں۔

ماہرین کا خیال ہے کہ پاکستان میں جس تیزی سے ایچ آئی وی ایڈز پھیل رہا ہے کچھ عرصہ بعد پاکستان ایڈز سے متاثرہ ممالک کی فہرست میں شامل ہو جائے گا۔

یاد رہے کہ اس سے قبل سندھ کے شہر لاڑکانہ میں 1500 سے زائد لوگوں میں ایچ آئی وی ایڈز کے وائرس کی تصدیق ہونے کے بعد ضلع بھر میں ایڈز ایمرجنسی نافذ کر دی گئی ہے۔