سزا پانے والے فوجی افسران کو سول جیل منتقل کر دیا گیا ہے:ڈی جی آئی ایس پی آر

ویب ڈیسک ۔ گزشتہ ہفتے پاک فوج کی جانب سے تین ہائی رینک افسران کو بڑی سزائیں دی گئیں جن میں سے ایک جنرل کو 14  سال قید بامشقت جبکہ بریگیڈئیر اور حساس ادارے کے انجینئیر کو سزائے موت سنائی گئی تھی۔ ان تینوں افراد کو اپنی سزا کے لئے سول جیل حکام کے حوالے کر دیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور نے سوشل میڈیا رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ایک ٹویٹ میں کہا ہے کہ سزا یافتہ افسران کے بارے میں انٹیلی جنس معلومات ملتے ہی گرفتار کرلیا گیا تھا۔ جب تک ٹرائل چلتا رہا تینوں افسران فوج کی حراست میں رہے۔ان تینوں افراد کو اب سول جیل حکام کے حوالے کر دیا گیا ہے۔

آرمی چیف کی جانب سے سابق جنرل اور بریگیڈئیر سمیت ایک سول افسر کی سزاوٴں کی توثیق کرنے کے بعد چند شر پسند عناصر نے سوشل میڈیا پر یہ افواہ پھیلا دی تھی کہ ٹرائل شدہ فوجی افسران کو بیرون ملک منتقل کر دیا گیا تھا یا وہ سرے سے ملک میں ہیں ہی نہیں۔ ڈی جی آئی ایس پی آر کے ٹویٹ کے بعد ایسی تمام افواہیں دم توڑ گئیں۔

یاد رہے کہ بریگیڈیئر (ر) راجا رضوان کو موت کی سزا جبکہ لیفٹیننٹ جنرل (ر) جاوید اقبال کوغیر ملکی ایجنسیوں کے لئے جاسوسی کے الزام میں  14 سال قید بامشقت کی سزا سنائی گئی تھی۔  ان کے علاوہ ڈاکٹر وسیم اکرم کو بھی سزائے موت سنائی گئی۔