شعیب ملک کے 20 سالہ طویل ون ڈے کیرئیر کا سورج مایوسیوں کیساتھ غروب

ویب ڈیسک ۔ پاکستان کے نامور آل راوٴنڈر شعیب ملک 20سال کے طویل عرصے پر محیط کیرئیر آج اپنے اختتام کو پہنچ گیا۔ قومی ٹیم کے ساتھ طویل عرصے تک جڑے رہنے والے ملک کے کیرئیر کا اختتام ایک انتہائی مایوس کن انداز میں ہوا۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان کے سب سینئیر آل راوٗنڈر اور 90کی دہائی کے آخری کرکٹر شعیب ملک کے کیرئیر کا سورج آج لارڈز کے گراوٗنڈ میں اختتام پذیر ہو گیا۔ کامیابیوں سے بھر پور شعیب ملک کے کیرئیر کا خاتمہ ایک مایوس کن انداز میں ہوا اور وہ اپنے آخری میچ میں پلئینگ الیون میں شامل نہ ہوسکے اور گراوئنڈ سے باہر بیٹھے رہے۔

ویسٹ انڈیز کیخلاف اکتوبر 1999ءمیں ون ڈے کیریئر کا آغاز کرنے والے آل راﺅنڈر نے 287 میچز میں 34.55 کی اوسط سے 7534 رنز بنائے۔ انہوں نے 9 سنچریاں اور 44 نصف سنچریاں بھی سکور کیں۔

 

شعیب ملک پاکستانی ٹاپ سکوررز کی فہرست میں انضمام الحق، محمد یوسف، سعید انور اور شاہد آفریدی کے بعد پانچویں نمبر پر ہیں، انھوں نے بڑی اننگز 143 کی کھیلی، باﺅلنگ میں 39.18 کی ایوریج سے 158 شکار کیے، بہترین کارکردگی 19 رنز کے عوض 4 وکٹیں رہی۔

اس دوران شعیب ملک 2007ءسے 2009ء تک قومی کرکٹ ٹیم کے کپتان بھی رہے۔ اس دوران انہوں نے پہلے ٹی ٹونٹی کرکٹ ٹورنامنٹ میں پاکستان کی قیادت کی اور پاکستان کو فائنل تک پہنچایا جہاں پاکستان کو فائنل میں بھارت سے شکست ہوئی۔  طویل کیریئر میں کئی اتار چڑھاوٴ دیکھنے والے آل راوٴنڈر نے نومبر 2015ء میں ہی ٹیسٹ کرکٹ کو خیرباد کہہ دیا تھا آخری سیریز میں انگلینڈ کیخلاف انہوں نے ڈبل سنچری کی یادگار اننگز کھیلی تھی۔

 

کرکٹ ورلڈکپ  2019 شعیب ملک کے لئے کافی مایوس کن رہا اور انہوں نے پورے ایونٹ میں دو میچ کھیلے اور صرف آٹھ رنز بنا سکے۔ شعیب ملک نے جون 2018ء میں اعلان کیا تھا کہ ورلڈکپ کے بعد ون ڈے کرکٹ کو خیرباد کہہ دیں گے، انھوں نے آئندہ ورلڈ ٹی ٹونٹی میں شرکت کا ارادہ رکھتے ہیں۔