آٹے کی بوری پر ٹیکس، روٹی 15 اور نان 20 روپے کا، تبدیلی سرکار نے ‘غریب مکاوٴ’ پروگرام شروع کر دیا

ویب ڈیسک – حکومت نے باقاعدہ ’غریب مُکاوٴ‘ پروگرام کا آغاز کرتے ہوئے آٹے پر ٹیکس لگا دیا ہے جس سے نان بائیوں نے روٹی اور نان کی قیمتوں میں اضافے کا عندیہ دے دیا ہے۔  آٹے اور میدے کی بوری پر لگا ٹیکس واپس نہ لیا گیا تو پیر سے قیمتوں میں اضافہ کر دیا جائے گا، نان بائی ایسوسی ایشین کا اعلامیہ سامنے آ گیا۔

تفصیلات کے مطابق حکومت نے غریب کو بھوکا مار کے ملک سے غریب مکاوٴ مہم کا آغاز کر دیا ہے۔ حکومتی اقدامات سے آٹے کی 80 کلو والی بوری پر جی ایس ٹی کے نفاذ سے اس کی قیمت میں 550 روپے تک کا اضافہ ہونے کا امکان ہے۔ نان بائی ایسوسی ایشن کے مطابق بوری کی قمیت بڑھنے سے ہمیں بھی مجبوراً روٹی اور نان کی قیمتوں میں اضافہ کرنا ہوگا۔  قیمتوں میں اضافے کے بعد سادہ روٹی 15 اور نان 20 روپے میں ملا کرے گا۔

صوبہ کے پی کے دارالحکومت میں روٹی اور نان کی قیمتوں میں پہلے ہی اضافہ کیا جاچکا ہے۔ پشاور شہر میں فی روٹی 10 سے بڑھ کر 15 روپے میں فروخت ہونے لگی ہے۔حکومتی اقدامات پر عوام کی چیخیں نکلنا شروع ہو گئی ہیں اور عوام نے حکومت کو شدید آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت غریبوں کا آہستہ آہستہ مارنے کی بجائے ایک دفعہ لائن میں کھڑ اکر کے مار دے۔ پنجاب کے وزیر صعنت و تجارت میاں اسلم اقبال نے دعویٰ کیا ہے ہے کہ نان روٹی کی قیمت میں اضافہ نہیں کیا جا رہا۔