کرکٹ ورلڈکپ کا تاج پہلی بار انگلینڈ کے سر سج گیا

لندن ۔ لارڈز کے تاریخی کرکٹ گراوٴنڈ میں انگلینڈ نے ایک تاریخی جیت کے ساتھ پہلی مرتبہ کرکٹ ورلڈ کپ میں فتح حاصل کر لیا۔ دو مرتبہ میچ برابر ہونے کے بعد نیوزی لینڈ کو کم باوٴنڈریز کی بنیاد پر میچ میں شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ انگلینڈ کے کھلاڑی بین سٹوک کو مین آف دی میچ کا ایوارڈ دیا گیا جبکہ نیوزی لینڈ کے کپتان کین ولیم سن کو مین آف دی ٹورنامنٹ کا ایوارڈ ملا۔

تفصیلات کے مطابق نیوزی لینڈ کے کپتان کین ولیمسن نے ٹاس جیت کر پہلے خود بیٹنگ کا فیصلہ کیا۔ نیوزی لینڈ نے 241 رنز بنائے۔  کیویز کی جانب سے نکولس 55، لیتھم 47جبکہ کپتان ولیمسن 30 رنز بنا کر نمایاں بلے باز رہے۔ انگلینڈ کی جانب سے ووکس اور پلنکٹ نے تین تین جبکہ آرچر اور ووڈ نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔ہدف کے تعاقب میں جیسن روئے اور بیرسٹیو میدان میں اترے اور ٹیم کے سکور کو آگے بڑھایا۔ تاہم ٹیم کا سکور ابھی 28 پر ہی پہنچا تھا کہ جیسن روئے آؤٹ ہو گئے، انہوں نے صرف 17 رنز بنائے۔ بین سٹوکس اور بٹلر نے اپنی جارحانہ بلے بازی سے میچ کو انتہائی دلچسپ بنا دیا۔

بٹلر نے 60 گیندوں کا سامنا کرتے ہوئے 6 چوکوں کی مدد سے 59 رنز کی اننگز کھیلی، تاہم ٹیم کا سکور 196 پر ہی پہنچا تھا کہ بٹلر ایک اونچی شارٹ کھیلنے کی کوشش میں کیچ آؤٹ ہو گئے۔ ایک طرف سے وکٹیں گرتی رہیں تاہم سٹوکس نے اپنی جارحانہ بلے بازی جاری رکھی اور میچ میں دلچسپی ختم نہ ہونے دی۔ آخری اوور میں انگلینڈ کی ٹیم کو جیت کیلئے 15 رنز درکار تھے جسے سٹوکس نے میچ کی آخری بال پر لیول کر دیا۔ سٹوکس نے تاریخی بیٹنگ کی اور 98 گیندوں پر 5 چوکوں اور 2 چھکوں کی مدد سے 84 رنز بنا کر ناٹ آؤٹ رہے۔

 

سٹوکس کی شاندار اور جارحانہ بلے بازی نے سکور کو لیول کر دیا۔ اس کے بعد میچ کا فیصلہ سپر اوورز میں ہوا۔ے سٹوکس اور بٹلر میدان میں اترے اور اس مرتبہ بھی شاندار بلے بازی کرتے ہوئے نیوزی لینڈ کو جیت کیلئے 16 رنز کا ہدف دیا۔ نیوزی لینڈ نے بھی 15 رنز بنائے تاہم کیوی ٹیم کا ایک کھلاڑی رن آؤٹ ہوا جب کہ انگلینڈ کا کوئی پلیئر آؤٹ نہیں ہوا اور یوں انگلش ٹیم کو فاتح قرار دیا گیا۔

انگلینڈ پہلی مرتبہ کرکٹ ورلڈکپ کا چیمپئین بنا ہے اس سے قبل انگلینڈ آخری مرتبہ 1992 میں ورلڈکپ کے فائنل میں پہنچا تھا جہاں اسے پاکستان کے ہاتھوں شکست ہوئی تھی۔ جبکہ نیوزی لیند کی یہ مسلسل دوسری مرتبہ فائنل میں شکست ہے۔