دو مرتبہ میچ برابر ہونے کے باوجود انگلینڈ فائنل کیسے جیتا؟ اصل وجہ سامنے آ گئی

ویب ڈیسک ۔ انگلینڈ نے ورلڈکپ 2019کے فائنل میں نیوزی لینڈ کو سنسنی خیز مقابلے کے بعد سپر اوور میں شکست دے کر پہلی مرتبہ کرکٹ ورلڈکپ کا ٹائٹل اپنے نام کر لیا۔ 242 رنز کے ہدف کے تعاقب میں انگلینڈ کی پوری ٹیم نیوزی لینڈ کے 241 رنز کے مقابلے میں 241رنز پر ہی آوٴٹ ہو گئی جس کے بعد میچ سپر اوور میں چلا گیا۔

کرکٹ تاریخ میں شاید پہلی بار ایسا ہوا ہو گا کہ میچ سپر اوور میں بھی برابر ہو گیا ۔ انگلینڈ نے سپر اوور میں 15 رنز بنائے اور نیوزی لینڈ کو 16 رنز کی ہدف ملا۔ نیوزی لینڈ نے سپر اوور میں 15 رنز بنائے اور وونگ رن لیتے ہوئے مارٹن گپٹن رن آوٴٹ ہوگئے اور یوں ورلڈکپ کا فائنل سپر اوور میں بھی برابر ہو گیا۔

سپر اوور میں میچ برابر ہونے کے بعد انگلینڈ کو میچ میں زیادہ چوکے اور چھکے لگانے پر فاتح قرار دے دیا گیا۔ کرکٹ قوانین کے مطابق اگر میچ سپر اوور میں بھی برابر ہو جائے تو میچ کا فیصلہ زیادہ باوٴنڈریز لگانے والی ٹیم کے حق میں دے دیا جاتا ہے۔ نیوزی لینڈ نے میچ میں 16 باوٴنڈریز لگائیں جب کہ انگلینڈ نے 24 مرتبہ گیند کو باوٴنڈری کے پار بھیجا تھا۔