میں اپنی حرکت پر نیوزی لینڈ کے کپتان سے معافی مانگتا ہوں، ورلڈ چیمپئن کھلاڑی نے بڑا اعلان کر دیا

ویب ڈیسک – گزشتہ روز انگلینڈ نے نیوزی لینڈ کو ورلڈکپ 2019 کے فائنل میں سپر اوور میں ہرا دیا۔ کرکٹ شائیقین کو ورلڈکپ فائنل کا ایسا سنسنی خیز میچ شاید دوبارہ کبھی دیکھنے کو نہ ملے۔ تاہم ورلڈکپ کے آخری معرکے میں ایمپائروں کے متنازع فیصلوں نے اس بڑے مقابلے کے حسن کو گہنا دیا ہے۔

نیوزی لینڈ شاید یہ میچ جیت جاتا لیکن ایک اوور تھرو پر ہوئے چوکے نے تاریخ میں پہلی بار انگلینڈ کو ورلڈ چیمپئین بنا دیا۔ انگلش  آل راؤنڈر بین اسٹوکس نے ورلڈ کپ فائنل کے آخری اوور میں غیردانستہ طور پر گیند کی راہ میں آئے اور اوور تھرو پر چوکا  ہو گیا۔ اب بین سٹوک نے اپنی اس حرکت پر نیوزی لینڈ کے کپتان کین ولیم سن سے معافی مانگ لی ہے۔

بین سٹوک کا کہنا ہے کہ میں جو کیا وہ دانستہ نہیں تھا تاہم میں کین ولیم سے کہتا ہوں کہ میں اپنی ساری زندگی اس اوور تھرو پر آپ سے معافی مانگتا رہوں گا۔

یاد رہے کہ  انگلینڈ کو فتح کے لیے آخری اوور میں 15 رنز درکار تھے اور ان کی امیدوں کا محور بین اسٹوکس تھے۔ بولٹ کی جانب سے کرائے گئے اوور کی پہلی دو گیندوں پر کوئی بھی رن نہ بن سکا جس کے بعد تیسری گیند پر اسٹوکس نے چھکا مار دیا۔

اوور کی چوتھی گیند کو انہوں نے ڈیپ مڈ وکٹ کی جانب کھیلا اور 2 رنز بنانے کے لیے دوڑ پڑے، دوسرے رن کے لیے واپسی کرتے ہوئے انہوں نے وکٹ بچانے کے لیے ڈائیو لگائی تو فیلڈر کی جانب سے پھینکی گئی تھرو ان سے ٹکرا کر تھرڈ مین باؤنڈری پار کر گئی اور اس طرح انگلینڈ کو 2 کی جگہ اضافی 4 رنز کے ساتھ مجموعی طور پر 6 رنز کا تحفہ مل گیا۔ اور یہی اوور تھرو کے 4 رنز نیوزی لینڈ کی شکست کا باعث بن گئے تھے۔

تبصرہ کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *