وادی نیلم میں بادل پھٹ گئے، طوفانی بارشیں اور سیلابی ریلوں سے 30 افراد جاں بحق، سینکڑوں بے گھر

ویب ڈیسک ۔ وادی نیلم میں بادل پھٹنے سے طوفانی بارشوں اور سیلابی ریلوں نے تباہی مچا دی ہے۔ جس کے نتیجے میں اب تک 30 سے زائد افراد جاں بحق ہو گئے ہیں جبکہ کئی افراد لاپتہ ہیں۔ سیلابی ریلوں اور تیز بارشوں سے کئی مکانات بہہ گئے جس کی وجہ سے وادی میں سینکڑوں لوگ بے گھر ہو گئے ہیں۔ امدادی ٹیموں کی جانب سے متاثرہ علاقوں میں فوری امدادی کارووائیاں کی جا رہی ہیں اور متاثرہ افراد کو محفوظ مقامات پر پہنچایا جا رہا ہے۔

تفصیلات کے مطابق آزاد کشمیر کی وادی نیلم میں رواں ہفتے جاری بارشوں نے تباہی مچا دی ہے۔ طوفانی بارشوں سے ندی نالوں میں طغیانی آگئی جس سے وادی میں سیلابی صورتحال بن گئی۔ سیلابی ریلوں نے پوری وادی کو تحس نہس کر کے رکھ دیا۔ سیلابی ریلوں میں بہہ جانے سے اب تک 30 افراد اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھے جبکہ درجنوں اب بھی لاپتہ ہیں۔ سیلابی ریلوں نے وادی میں کئی گھروں کو بھی تباہ کر دیا اور اپنے ساتھ بہا لے گئے جس کے نتیجے میں سینکڑوں افراد بے گھر ہو گئے ہیں۔ طوفانی بارشوں سے پیدا ہونے والی لینڈ سلائیڈنگ سے وادی کا مشہور لیسوا بازار مکمل طور پر تباہ ہوگیا ہے۔

سٹیٹ ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی کے ڈائریکٹر آپریشن سعید الرحمن قریشی کے مطابق جاں بحق ہونے والوں میں خواتین اور بچوں بھی شامل ہیں، جبکہ  لاپتہ افراد میں بھی خواتین، بچے اور بزرگ شامل ہیں جن کی تلاش کا کام جاری ہے۔ انہوں نے بتایا کہ جاں بحق ہونے والے زیادہ تر افراد کی لاشیں سیلابی ریلوں کے ساتھ دیائے نیلم میں بہہ گئی ہیں۔

ایس ڈی ایم اے اور پولیس کی ٹیمیں متاثرہ علاقے میں پہنچ گئی ہیں اور امدادی کارروائیاں شروع کر دی ہیں۔ انتظامیہ نے مظفرآباد میں ایمر جنسی کنٹرول روم قائم کر دیا ہے جس کا نمبر 05821921643 ہے۔