عالمی عدالت انصاف میں آج بھارتی دہشتگرد کلبھوشن یادیو کیس کا فیصلہ سنایا جائے گا

ویب ڈیسک – بھارتی دہشتگرد اور خفیہ ایجنسی راء حاضر سروس افسر کلبھوشن یادیو کی قسمت کا فیصلہ آج ہیگ میں عالمی عدالت انصاف میں سنایا جائے گا۔ یہ فیصلہ پاکستانی وقت کے مطابق شام 7 بجے سنایا جائے گا۔ فیصلہ سننے کے لئے پاکستان کی جانب سے  اٹارنی جنرل کی قیادت میں ایک خصوصی وفد ہیگ پہنچ چکا ہے۔

تفصیلات کے مطابق  عالمی عدالت انصاف بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کیس کا فیصلہ آج سنانے جا رہی ہے۔  عالمی عدالت انصاف کے صدر اور جج عبدالقوی احمد یوسف بھارتی اپیل کا فیصلہ سنائیں گے۔آخری سماعت میں پاک بھارت دونوں وفود نے شرکت کی تھی جہاں بھارتی وفد کی سربراہی جوائنٹ سیکرٹری دیپک متل نے جب کہ پاکستانی وفد کی سربراہی اٹارنی جنرل انور منصورخان نے کی تھی۔ سماعت کے دوران بھارت کی طرف سے ہریش سالوے نے دلائل پیش کیے جبکہ پاکستان کی طرف سے خاور قریشی نے بھرپور کیس لڑا تھا۔

ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل نے کہا تھا کہ عالمی عدالت انصاف میں کلبھوشن کیس بہت اچھا لڑا، نتیجہ بھی اچھا آئے گا، عالمی عدالت کا فیصلہ تسلیم کرینگے۔ ان کا کہنا تھا کہ کلبھوشن یادیو کے بارے میں بھارت کوئی ثبوت پیش نہیں کر سکا۔

یاد رہے کہ پاکستانی خفیہ ایجنسیوں نے سال 2016 میں بھارتی خفیہ ایجنسی کے حاضر سروس افسر کمانڈر کلبھوشن یادیو کو صوبہ بلوچستان سے گرفتار کیا تھا۔ کلبھوشن یادیو بھارتی نیوی کا کمیشینڈ آفیسر بھی ہے۔ جنگ عظیم دوئم کے بعد یہ پہلا موقع تھا کہ کسی افسر لیول کے جاسوس کو رنگے ہاتھوں گرفتار کیا گیا تھا۔

کلبھوشن یادیو ایرانی پاسپورٹ پر ایک مسلمان تاجر حسین مبارک کے نام سے کارووائیاں کر رہا تھا۔ پاکستانی ایجنسیوں نے طویل عرصے تک کلبھوشن یادیو کی ریکی کر کے اسے گرفتار کیا تھا۔ کلبھوشن یادیو پاکستان میں  دہشت گردی کی متعدد کارروائیوں ملوث تھا۔ کلبھوشن نے پاکستانی ایجنسیوں کی تحویل میں اس بات کا اعتراف بھی کیا تھا کہ وہ بھارتی ایجنسی را کا افسر ہے اور پاکستان میں انارکی اور دہشت گرد کارروائیوں کے مشن پر تھا۔