جج ارشد ملک کی ویڈیوز بنانے والا اہم ملزم گرفتار

ویب ڈیسک – احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کی خفیہ ویڈیوز بنانے والے مرکزی ملزم میاں طارق محمود کو ایف آئی اے کے سائبر ونگ نے گرفتار کر لیا، ملزم میاں طارق پر احتساب عدالت کے جج سمیت کئی اہم لوگوں کی خفیہ ویڈیوز بنانے کا الزام ہے۔

تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ ن کے تاحیات قائد اور سابق وزیراعظم نوازشریف کے خلاف فیصلہ دینے والے احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کی خفیہ ویڈیوز بنانے والا اہم ملزم اب ایف آئی اے کی حراست میں ہے۔ ایف آئی اے کے مطابق میاں طارق محمود کو دبئی فرار ہوتے ہوئے گرفتار کیا گیا۔ دریں اثناء ملزم کوجوڈیشل مجسٹریٹ شائستہ کنڈی کی عدالت میں پیش کیاگیا۔ جہاں عدالت نے ملزم میاں طارق کا 2 روزہ جسمانی ریمانڈ منظورکرلیا۔

میاں طارق محمود پر الزام ہے کہ اس نے اپنے بھائی کی مدد سے جج ارشد ملک کی مبینہ ویڈیو بنائی اور مبینہ طور پر کروڑوں روپے میں نواز شریف کو فروخت کی۔

میاں طارق محمود کی گرفتاری پر مریم نواز نے اپنا ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ  اچھا ہوا مگر اس ویڈیو کو جج کو دکھا کر بلیک میل کرنے اور نواز شریف کو بےگناہ ہوتے ہوئے بھی زبردستی سزا دلوانے والوں کو بھی پکڑا جائے گا؟ انہوں نے مزید کہا کہ حسین نواز کی تصویر لیک کرنے والوں کے خلاف بھی کاروائی ہو گی؟

یاد رہے کہ مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے ایک پریس کانفرنس میں الزام لگایا تھا کہ احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کو بلیک میل کرکے نواز شریف کو سزا دینے پر مجبور کیا گیا۔ مریم نواز نے ثبوت کے طور پر ارشد ملک کی ایک ویڈیو اپنی پریس کانفرنس میں چلائی جس میں ارشد ملک کو دباوٴ کے تحت فیصلے کرنے کا اقرار کرتے ہوئے سنا اور دیکھا جا سکتا ہے۔ تاہم جج ارشد ملک نے اس دعوے کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ ن لیگ نے انہیں نواز شریف کے حق میں فیصلہ سنانے کے لیے رشوت کی پیش کش کی اور دھمکیاں دیں۔