کشمیر میں کرفیو نافذ، محبوبہ مفتی اور عمر عبداللہ گرفتار

ویب ڈیسک ۔ گجرات کے قصائی اور بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے اپنا اصل رنگ دکھانا شروع کر دیا۔ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے بعد پوری مقبوضہ وادی میں کرفیو نافذ کر دیا گیا ہے اور سابق وزیراعلیٰ مقبوضہ کشمیر مفی محبوبہ اور عمر عبداللہ کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق آج بھارتی صدر نے ایک خصوصی حکم نامے کے بعد مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کو ختم کرنے کے بعد آرٹیکل 370اور 35اے کو ختم کر دیا۔ جس کے بعد کشمیر میں کرفیو نافذ کر دیا گیا ہے۔ کشمیری عوام اپنے اپنے گھروں میں قید ہو کر رہ گئی ہے۔ جبکہ مقبوضہ کشمیر کے سابق وزرائے اعلیٰ محبوبہ مفتی اور عمر عبداللہ کو باقاعدہ گرفتار کر لیا گیا ہے۔

اس سے قبل محبوبہ مفتی نے بھارتی حکومت کے اقدامات پر کہا تھا کہ ہم نے 1947میں دو قومی نظریہ کو ٹھکرا کر بھارت کے ساتھ الحاق کر کے غلطی کی جس خمیازہ آج بھتگنا پڑ رہا ہے۔ جبکہ عمر عبداللہ نے بھارتی حکومت کے فیصلے خلاف عدالت جانے کا اعلان کیا تھا۔