عمران خان کا ترک صدر طیب اردگان اور ملائیشین صدر مہاتیر محمد سے رابطہ، مقبوضہ کشمیر میں بھارتی جارحیت پر آگاہ کیا

ویب ڈیسک ۔ مقبوضہ کشمیر میں بگڑتی ہوئی صورتحال اور بھارت کی جانب سے جنگی اقدامات پر پاکستان کے وزیراعظم عمران خان نے ترکی کے صدر طیب رجب اردگان اور ملائشیا کے صدر مہاتیر محمد سے ہنگامی طور پر رابطہ کیا ہے اور انہیں خطے میں ہونے والی تبدیلیوں کے حوالے سے آگاہ کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر کا خصوصی درجہ ختم کرنے کے بعد خطے میں تیزی سے بدلتی ہوئی صورتحال پر وزیراعظم عمران خان نے برادر اسلامی ممالک ترکی اور ملائیشیا کے صدور سو ہنگامی طور پر رابطہ کیا ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے سب سے پہلے ملائیشیا کے وزیراعظم مہاتیر محمد کیساتھ ٹیلی فونک رابطہ کیا۔ وزیراعظم نے مہاتیر محمد کو کہا کہ مقبوضہ کشمیر کی حیثیت تبدیل کرنا اقوام متحدہ کی قراردادوں کی خلاف ورزی ہے، بھارتی غیر قانونی اقدام سے علاقائی امن وسلامتی متاثر ہوگی۔ بھارتی اقدام سے دو ایٹمی ہمسایوں کے تعلقات مزید خراب ہونگے۔

اعظم نے ترکی کے صدر رجب طیب اردوان کو بھی ٹیلیفونک کر کے مقبوضہ کشمیر کی صورتحال سے آگاہ کیا ہے، اس دوران ترک صدر نے وادی کی صورتحال پر تشویش کا اظہار کیا۔

وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ پاکستان کشمیریوں کی منصفانہ جدوجہد کی سیاسی، اخلاقی اور سفارتی حمایت جاری رکھے گا۔ مقبوضہ کشمیر کے حوالےسے بھارتی فیصلہ کے علاقائی امن و سیکیورٹی پر سنگین اثرات مرتب ہوں گے۔ ترک صدر طیب اردگان نے مسئلہ کشمیر پر پاکستان کے موقف کی حمایت کا اعلان کیا ہے۔