کشمیر پر ثالثی، مودی نے ٹرمپ کو صاف جواب دے دیا

ویب ڈیسک ۔ بھارت کے وزیراعظم نریندر مودی کی ہٹ دھرمی برقرار، امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے مقبوضہ کشمیر پر ثالثی کی پیشکش کو ایک بار پھر ٹھکرا دیا، کہا کہ پاکستان اور بھارت مل کر سے مسئلہ حل کر لیں گے امریکہ کی ضرورت ہوئی تو بتا دیں گے۔

تفصیلات کے مطابق فرانس میں جاری جی 7 اجلاس کے موقع پرامریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کے درمیان ملاقات ہوئی۔ ملاقات میں دونوں رہنماوٴں کے درمیان مقبوضہ کشمیر کا مسئلہ زیر بحث رہا۔  ٹرمپ نے کہا کہ گزشتہ شب پاکستان سے بھی مسئلہ کشمیر پر بات چیت ہوئی تھی۔ دونوں ممالک کو مل کر مسئلہ کشمیر حل کرنا ہوگا ۔

ٹرمپ کی ثالثی کی پیشکش پر بھارتی وزیراعظم مودی نے ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کرتے ہوئے کہا کہ  مسئلہ کشمیر کے تصفیے کے لیے پاکستان اور بھارت کے درمیان تیسرے ثالث کی ضرورت ہی نہیں ہے۔ دونوں ممالک مل کر اس مسئلے کا کوئی نہ کوئی حل نکال لیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے وزیراعظم کو پیغام دیا ہے کہ آئیں ملک کر غربت کے خلاف جنگ کرتے ہیں۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق فرانس کے درالحکومت پیرس میں بھارتی وزیر اعظم مودی کی آمد پر یونیسکو ہیڈ کوارٹر کے سامنے کشمیری پاکستانی کمیونٹی اور یورپ بھر کے سکھ کمیونٹی کے لوگوں نے مودی کے خلاف مظاہرے کیے۔ مظاہرے میں یورپ بھر سے بھاری تعداد میں کشمیر ،پاکستانی اور سکھ کمیونٹی نے شرکت کی۔