مودی سرکار کا نیا وار، 19 لاکھ بھارتی مسلمانوں کی شہریت منسوخ کر دی

ویب ڈیسک ۔ کشمیر کے بعد بھارتی ریاست آسام میں مودی سرکار نے وہاں بسنے والے مسلمانوں پر زمین تنگ کرنا شروع کر دی۔ انتہا پسند حکمران جماعت نے 19 لاکھ سے زائد مسلمانوں کی بھارتی شہریت ہی منسوخ کر ڈالی اگلے مرحلے میں ان تمام مسلمانوں کو ملک بدر کئے جانے کا امکان ہے۔ بھارتی حکومت نے ملک میں احتجاج کے پیش نظر آسام میں سیکیورٹی بھی سخت کر ڈالی۔

تفصیلات کے مطابقبھارتی حکومت نے شہریت سے متعلق رجسٹریشن لسٹ جاری کرتے ہوئے 19 لاکھ 6 ہزار 657 افراد کو بھارتی شہریت سے محروم کر دیا، ان افراد میں بیشتر بنگلہ دیشی مسلمان ہیں جو 1974 میں ہجرت کر کے بنگلہ دیش سے بھارتی ریاست آسام میں آ بسے تھے۔ ان تمام افراد سے اب زمینیں، ووٹ ڈالنے کا حق اورآزادی چھین کر حراستی مرکز یا ملک بدر کر دیا جائے گا۔

آسام کی حکومت نے ممکنہ احتجاج سے بچنے کی خاطر ریاست بھر میں  دفعہ 144 نافذ کر دی ہے۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق اس فہرست کو آسام میں انتہا پسندوں کے مطالبات کے بعد تیار کیا گیا۔