برطانوی نیشنل کرائم ایجنسی نے وزیراعظم عمران خان کو شریف فیملی کیخلاف ثبوت دے دئیے

ویب ڈیسک ۔ برطانیہ میں ملک ریاض کی جانب سے ایک بڑی سیٹلمنٹ کے بعد مزید انکشافات کا سلسلہ جاری ہے۔ سنئیر صحافی و تجزیہ کار کامران خان نے انکشاف کیا ہے کہ برطانوی نینشل کرائم ایجنسی نے پاکستان کے وزیراعظم عمران خان کو شریف فیملی کی کرپشن کے خلف بڑے ثبوت دے دیئے ہیں۔

مائیکرو بلاگنگ کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کامران خان نے کہا کہ ایک دن حسن نوازکو لندن میں 10 ارب روپوں کے 1 Hyde Park کی خرید اور ملک ریاض کو زبردستی فروخت سمیت دنیا میں پھیلے اثاثوں کا حساب دینا ہوگاNCA نے ملک ریاض کے ساتھ civil settlement اور No admission of guilt کی کلین چٹ دی اورعمران خان کو شریفوں پر دھماکہ خیز ثبوت تھمائے، بڑی کہانی۰۰

یاد رہے کہ  برطانیہ کی نیشنل کرائم ایجنسی نے ون ہائیڈ پارک سمیت ملک ریاض کی جانب سے 190 ملین پاؤنڈز کی پیش کش قبول کرلی۔ یہ اثاثے حکومت پاکستان کو واپس کئے جائیں گے۔

برطانیہ کی نیشنل کرائم ایجنسی کی جانب سےجاری پریس ریلیز میں بتایا گیا ہے کہ اگست 2019 میں ویسٹ منسٹر مجسٹریٹ کی عدالت نے 8 اکاؤنٹس کو منجمد کرنے کا حکم دیا ۔ ان اکاؤنٹس میں مجموعی طور پر 120 ملین پاؤنڈز کے فنڈز موجود تھے۔ اس سے قبل اس کیس میں ہونے والی تحقیقات کے نتیجے میں دسمبر 2018 میں 20 ملین پاؤنڈز کو منجمد کرنے کا حکم بھی جاری کیا گیا تھا۔

ان تمام عدالتی احکامات کے تحت وہ رقم منجمد کی گئی جو برطانوی بینک اکاؤنٹس میں تھی۔ برطانوی نیشنل کرائم ایجنسی نے 190 ملین پاؤنڈز کی واپسی کی پیش کش قبول کرلی ہے۔ اس رقم میں برطانیہ میں ایک جائیداد،لندن کے ہائیڈ پارک میں ایک جگہ، لندن اور وی ٹو ٹو ایل ایچ میں 50 ملین پاؤنڈ مالیت کی جائیداد اور منجمد ہونے والے اکاؤنٹس میں رقم شامل ہے۔ یہ تمام جائیداد پاکستان کی حکومت کو منتقل کردی جائے گی۔