ویب ڈیسک ۔ پاکستانی سیاستدانوں نے قرآن مجید اٹھانا ایک کھیل بنالیا ہے، ہر چھوٹی بات پر ایک سیاستدان پریس کانفرنس میں قرآن اٹھا کر اپنی بے گناہی ثابت کرنے کی کوشش کرتا ہے۔ ایسا ہی معاملہ چند سال قبل ذوالفقار مرزا نے کیا اور اب یہ قرآن اٹھانے کا مقابلہ تحریک انصاف کے شہریار آفریدی اور مسلم لیگ ن کے رانا ثنا ء اللہ کے درمیان ہو رہا ہے۔

تفصیلات کے مطابق آج  قومی اسمبلی میں مسلم لیگ کے رہنما رانا ثنا اللہ نے تحریک انصاف حکومت کے وزیر شہریار آفریدی کو قرآن پاک اٹھا کر قسم کھانے کا چیلنج  کیا جسے شہریار آفریدی نے رانا ثناء اللہ کا چیلنج قبول کرتے ہوئے قرآن پاک اٹھالیا۔

شہریار آفریدی قرآن پاک پر قسم کھانے ہی لگے تھے کہ وزیر مذہبی امور نورالحق قادری نے شہریار آفریدی کو ایسا کرنے سے منع کیا اور قرآن پاک شہریار آفریدی کے ہاتھ سے لے لیا۔۔ اسپیکر نے اجلاس ملتوی کردیا۔

منشیات برآمدگی کیس میں نامزد لیگی رہنما رانا ثناء اللہ نے ایک بار پھر قسم کھاتے ہوئے کہا کہ میں قسم کھاکر کہتا ہوں کہ میں بے گناہ ہوں۔

اس ساری صورتحال پر معروف صحافی انعام اللہ خٹک نے اپنئ ٹویٹ میں تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ خواجہ آصف نے جلتی پر تیل لگانے کا کام کیا۔ قرآن پاک منگوا کر رانا ثناءاللہ اور شہریار آفریدی کے درمیان مقابلہ کروایا۔ خود ہنستا رہا۔ خواجہ، اگر ایسے ہی جھوٹ اور سچ کا موازنہ کرانا ہو تو اپنی حکومت میں عدالتوں کا خاتمہ کرتے۔ قرآن پاک مقدس کتاب ہے اس کو گندی سیاست کی نذر نہ کریں۔