دنیا کو سب سے پہلےکرونا وائرس سے خبردار کرنے والا چینی ڈاکٹر بھی موت کا شکار ہو گیا

ووہان( ویب ڈیسک) حالیہ دنوں میں تیزی سےپھیلتا کرونا وائرس پوری دنیا کو دہشت زدہ کیے ہوئے ہے ۔ایک اندازے کے مطابق چین میں اس وائرس سے متاثرہ 1 ہزار افراد اب تک جاں سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں۔یہاں تک کہ اب اس وائرس سے دنیا کو متنبہ کرنے والا چینی ڈاکٹر بھی انفیکشن کی وجہ سے موت کا شکار ہو گیا ہے۔ یاد رہے کہ اس وائرس کی نشاندہی دسمبر میں چینی شہر ووہان میں ایک34 سالہ ماہر چشمِ نفسیات( opthalmologist) ڈاکٹر لی وینلیانگ نے کی تھی۔چائنا سٹیٹ میڈیا کے مطابق دنیا کو سب سے پہلے کرونا وائرس سے خبردار کرنے والا یہ جواں سال ڈاکٹر بھی اس وائرس کے انفیکشن کی زد میں آکر دم توڑ گیا ہے۔
واضح رہے کہ 30 دسمبر کو ڈاکٹر لی نے اپنے میڈیکل سکول الومنی گروپ کو میسج کر کے وائرس سے متعلق مطلع کیا اور انہیں حفاظتی لباس پہننے کا کہا۔ ڈاکٹر لی نے مقامی سی فوڈ مارکیٹ سے انفکیشن کے شکار سات مریضوں میں” سارس وائرس” کی طرح کی بیماری ( کرونا) کی تشخیص کی تھی اور سوشل میڈیا پر لوگوں کو اس بیماری سے خبردار کیا تھا تاہم اس وقت اسے ایک افواہ سمجھا گیا اور مقامی پولیس نے ڈاکٹر لی کے خلاف افواہ پھیلانے کے جرم میں کارروائی کر کے اسے خاموش کروا دیا تھا۔